مصنف کی تحاریر : گوہر ملک / شاہ محمد

جُوں (بچوں کے لیے بلوچی کہانی)

  ایک تھا جُوں۔ وہ بے شمار بچوں کے سر میں گُھستا اور اُن کا خون چوستا ۔ ایک روز وہ اس نیت سے ایک بچے کے سر سے باہر نکلا کہ کسی دوسرے بچے کے سر پر جاؤں گا ۔ راستے میں اُسے ایک مرغے نے دیکھا۔مرغے نے چونچ ...

مزید پڑھیں »

گل خان نصیر کا مجسمہ

ایوبی دور میں قلی کیمپ کے عقوبت خانے کے درودیوار سے چیخ و پکار کی آوازیں سازِ امروز بن چکی تھیں۔ اس عقوبت خانے میں مصائب و مشکلات واحد پہچان تھے ۔معمولی حقوق عظیم رعایتوں کا درجہ پا چکے تھے۔ بربریت نے انسانیت کی رمق ریت میں نچوڑ دی تھی۔ ...

مزید پڑھیں »

ورکنگ لیڈی

  نہ چُوڑی کی کَھن کَھن ، نہ پائل کی چَھن چَھن نہ گجرا ،نہ مہندی ، نہ سُرمہ ، نہ اُبٹن میں خود کو نہ جانے کہاں بُھول آئی ؟؟ جو ڈیوڑھی سے نکلی تو بچے کی چیخیں وہ چُولھا ، وہ کپڑے، وہ برتن ، وہ فیڈر وہ ...

مزید پڑھیں »

ورکنگ لیڈی

نہ چُوڑی کی کَھن کَھن ، نہ پائل کی چَھن چَھن نہ گجرا ،نہ مہندی ، نہ سُرمہ ، نہ اُبٹن میں خود کو نہ جانے کہاں بُھول آئی ؟؟ جو ڈیوڑھی سے نکلی تو بچے کی چیخیں وہ چُولھا ، وہ کپڑے، وہ برتن ، وہ فیڈر وہ ماسی ...

مزید پڑھیں »

گھڑی

  زمانے صدیوں سے اپنے پہر بسر کر رہے ہیں۔ جو سورج کی نمود، چاند کے ڈوبنے، اور یلدا کی گھاٹی سے ظاہر ہیں۔ جفت و طاق لمحات ایک ہی چکر میں یکجا نہیں۔ چاروں موسموں کی کیفیت تین سو پینسٹھ دنوں کی وسعت ہے۔ ایک ڈائل آٹھ پہروں کا ...

مزید پڑھیں »

اے اپسرا تُم کون ہو؟

تُم کو کہیں دیکھا ہے شاید، پَر کہاں؟ تُم نجد کی وادی میں بھٹکے قافلے سے تو نہیں؟ آنکھیں تمہاری گُم کسی احساس میں آنکھیں کہ جن میں آگ ہے، آنکھیں کہ جِن میں رنگ ہیں آنکھیں کہ جِن میں آئنے ، آنکھیں کہ جِن میں سنگ ہیں آنکھیں کہ ...

مزید پڑھیں »

اس شہر میں رہ کیا گیا ہے

  لٹن روڈ کی مہکتی شادابیوں کی جگہ کنکریٹ زدہ راہگزر نے لے لی پرنس روڈ کی ناشاد یکطرفگی کی سزا نہ لوٹتے سیاحوں کو دی گئی دور سمنگلی کے اجڑتے باغوں میں اک شہرِ نوک نوا سجتا گیا زندہ دلانِ سریاب کے چہکتے دلوں کو روزِ امروز کی مایوس ...

مزید پڑھیں »

غزل

  ذرا کہیں نظر آئے تو اس سے شکوہ کروں وہ تھا کہیں، نظر آئے تو اس سے شکوہ کروں ہمارے شہر کا چشم و چراغ تھا وہ چراغ ہوا کہیں نظر آئے تو اس سے شکوہ کروں وہ ہر کہیں نظر آتا ہے اپنے ساتھ مجھے جدا کہیں نظر ...

مزید پڑھیں »

مصری خان کھیترانڑ، باکو کانفرنس

  بلوچ سامراج دشمنی کو انگیخت و انگیز کرنے میں سب سے اہم عنصریہ تھا کہ یہاں نیم فیوڈل، ماقبل فیوڈل پیداواری رشتے تھے۔ ایک طرف مصیبت زدہ مظلوم عوام الناس تھے اور دوسری طرف استحصال کے فیوڈل صورتوں کے ساتھ ساتھ اُن کے اتحادی کے مسلط کردہ کالونیل کپٹلسٹ ...

مزید پڑھیں »

جس کا کوئی انتظار نہ کر رہا ہو

  جس کا کوئی انتظار نہ کر رہا ہو اسے نہیں جانا چاہیے واپس آخری دروازہ بند ہونے سے پہلے جس کا کوئی انتظار نہ کر رہا ہو اسے نہیں پھرنا چاہیے بے قرار ایک خوبصورت راہداری میں جب تک وہ ویران نہ ہوجائے جس کا کوئی انتظار نہ کر ...

مزید پڑھیں »