Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی

شیرانی رلی

May, 2022

  • 11 May

    موازنہ  ۔۔۔ فضل احمد خسرو

    کیسا فن ہے؟ کیا فن کاری؟ ایک نمائش خود کو نمایاں تر کرنے کی چھوٹی خواہش واحد مُتکلم کا ایک غرور عبث ہے دانشور ہے اور دانش بھی اِس پر بس ہے بے عملی کی شاخ پہ کِھلتا بے رنگ و خوشبو سا سایہ اپنے تئیں جو بے ہم سر ہے، یکتا ہے جو بھی فرمایا شعر شعور سے خالی ...

  • 11 May

    گل خان نصیر

    خشک و چٹیل دشتِ ناپیدا کنار اور اس میں جھونپڑیوں کی قطار کڑکڑاتی دھوپ تپتا ریگ زار ہر طرف چھایا ہوا گرد و غبار چند جانیں نیم عریاں بے قرار صاحبانِ جاہ و دولت کے شکار سر چھپائے جھگیوں میں اشکبار موت کی کرتے ہیں اپنی انتظار لوگ کہتے ہیں کہ یہ تقدیر ہے زندگی کی یہ بھی اک تصویر ...

  • 11 May

    Aqsa

    If I had words I’d write you storms I’d write you fire I’d bid you farewell to Lasting chaos But What does one do when all ceases to be The fire The storm Impending chaos When silence becomes the norm of the day These maudlin pathos Won’t meet your return No tears, No pleading Will meet your return No fervent ...

  • 11 May

    مزدوروں کا گیت ۔۔۔  اسرار الحق مجاز

    محنت سے یہ مانا چُور ہیں ہم آرام سے کوسوں دُور ہیں ہم پر لڑنے پر مجبور ہیں ہم مزدور ہیں ہم مزدور ہیں ہم   گو آفت و غم کے مارے ہیں ہم خاک نہیں ہیں تارے ہیں اس جگ کے راج دلارے ہیں مزدور ہیں ہم مزدور ہیں ہم   بننے کی تمنا رکھتے ہیں مٹنے کا کلیجہ ...

  • 11 May

    محمود فدا کھوسہ

    دِیا ہوا کا دل میں جب جلا سکو تو ساتھ دو یہ زندگی کا فاصلہ مٹا  سکو تو ساتھ دو   مِرے جو دل کا شوق اب بڑھا ہے یار جس قدر سمجھ سکو یہ حال اگر نبھا سکو تو ساتھ دو   کْھلا کہاں ہے در مِرا نظر کہاں ہٹی مِری گھڑی یہ انتظار کی مٹا سکو تو ساتھ ...

  • 11 May

    First May vibes

    ڈاکٹر منیر رئیسانی   روپے کی قدر گھٹتی جارہی ہے مرے کاندھوں پہ رکھا وزن بڑھتا جارہا ہے مشقت کے کڑے اوقات بے حد ہو رہے ہیں میرا حاصل، مری محنت کی الٹی سمت بڑھتا ہے بہت ہی دور (پر نزدیک) بازیگر ہی ایسے جو مجھ کو لوٹ کر ممنون بھی کرتے ہیں اپنا سنا ہے مجھ کو  وہ مقروض ...

  • 11 May

    غریو عوام ۔۔۔ محمد رفیق مغیری

    دڑداں مانیں غریو عوام نَیں درکار مارا ہمے نظام رمغیں ڈھوریں ڈولا کپتو زندا گزارغیں تھیوغا عوام ظلما زوراخ کھنغیں کپتو لْچاں نیستیں ایذا لغام جنگ و جدل لْٹ و پھل ایذا استیں صحو شام زوراخ وثی زر ئے زورا غریوا کھنغیں کپتو قتلام ڈیہے مڑدم گْڑنغ لافاں دری آں ملغیں ایذا انعام اُڑدو لشکر وزیریں استیں نیستیں ایذا کھس ...

  • 11 May

    فیض احمد فیض

    ہم محنت کش جگ والوں سے جب اپنا حصہ مانگیں گے اک کھیت نہیں، اک دیس نہیں ہم ساری دنیا مانگیں گے   یاں ساگر ساگر موتی ہیں یاں پربت پربت ہیرے ہیں یہ سارا مال ہمارا ہے، ہم سارا خزانہ مانگیں گے   جو خون بہا جو باغ اجڑے،جو گیت دلوں میں قتل ہوئے ہر قطرے کا ہر غنچے ...

  • 11 May

    غلامان غلاماں ہیں  ۔۔۔ ثروت زہرا

    غلامان غلاماں ہیں ہمیں تم آزما لو کہیں محنت کرالو کوئی بھی صورت نکالو غلاما ن غلاماں ہیں   ہماری لوریوں میں روٹیوں کی جاپ آتی تھی جوانی آئی تو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اس چولھے چکی سے اضافی تھی جو ہم نے قد اٹھایا تو زمان نے بھوک لادی تھی تنیں  یہ گردنیں کیسے؟ کہ جب افلاس نے مہروں کی  علت ہی مٹا ...

April, 2022

  • 23 April

    عالم ئے اِسرار ۔۔۔ اکبر بارکزئی

    کوہ باریں بچکندنت؟ گوات باریں گْڑنک بنت؟ نود باریں سرپد بنت؟ مور باریں سر شودنت؟   باریں پْل ہم گندنت؟ رَنگ ہم نپس کشّنت؟ روچ باریں تْنّگ بیت؟ ماہ باریں جاں کشّیت؟   آس باریں آپْس بیت؟ آپ واب ہم گِندنت؟ باریں سِنگ و ڈوک وڈَل چْک وپیر و ورنا بَنت؟ باریں مْہرگ و مشتک وپت وواب ہم زانَنت؟ باریں ...