Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ

قصہ

October, 2021

  • 14 October

    بندی گھر ۔۔۔ نعیم آروی 

    وہ میرے دفتر کا پہلا دن تھا۔ حادثہ کچھ اتنا عجیب وغریب اور غیر متوقع تھا کہ میں کچھ دیر کے لیے ششدرہ گیا۔ بات اتنی اہم اور سنگین بھی نہ تھی میں پہلے کچھ سوچ لیتا۔اگر دفتری زندگی کا پہلے سے کچھ تجربہ ہوتا تو شاید بات یوں نہ بگڑتی کہ مجھے گھنٹوں منہ پھاڑے ٹک ٹک دیدم کی ...

  • 14 October

    لیکن۔۔۔رازق ابابکی/ غریب شاہ انجم

      براہوئی ترجمہ ”سردار ہمارا جگر پارہ ہے، اور ہم سردار کے دل میں رہتے ہیں، تم بھی سردار کی قربت حاصل کر سکتے ہو، لیکن……“بڑی مونچھوں والے شخص نے میر بخش کی آنکھوں میں آنکھیں ملاتے ہوئے اپنی بات بس یہیں پر ختم کر دی۔ میر بخش کے ہونٹوں پر کسی سوال کی لرزش تھی، لیکن وہ کچھ نہ ...

  • 14 October

    کام کرو کام ۔۔۔کوثر جمال

    “ہٹے گٹے، ہاتھ پیر سلامت، پھر بھی کام سے جان جاتی ہے، شرم نہیں آتی بیغیرتوں کو ہاتھ پھیلاتے ہوئے” میانے قد اور فربہ جسم کے الحاج ملک عبدالحکیم آج بھی بڑبڑاتے ہوئے گھر میں داخل ہوئے۔ تاہم گھر کے کسی فرد نے ان کی بات پر کچھ زیادہ دھیان نہیں دیا۔ کیونکہ جس طرح انھیں بڑبڑانے کی عادت ہو ...

  • 14 October

    مصنوعی ذہانت کی ذہانت ۔۔۔ نسیم سید

    قریب سہ پہر کا وقت تھا جب اچانک کمپیوٹر سائنس ڈویڑن کا دروازہ کھلا اور ایک لمبا اور قدرے فربہ جسامت کا آدمی، جلدی میں اندر داخل ہوا۔ یہ پروفیسر مارک کنگ تھا جو آج پھر اپنی چابیاں بھول گیا تھا۔ اس  کے ساتھ کام کرنے والوں میں سے بہت سے ساتھیوں نے اسے معمول کے مطابق کمرے، پھر داخلی ...

September, 2021

  • 16 September

    آنگن کا پیڑ ۔۔۔ شموئل احمد

    دہشت گرد سامنے کا دروازہ توڑ کرگھسے تھے اور وہ عقبی دروازے کی طرف بھاگا تھا۔ گھر کا عقبی دروازہ آنگن کے دوسرے چھور پر تھااور باہر گلی میں کھلتا تھالیکن وہاں تک پہنچ نہیں پایا….۔آنگن سے بھاگتے ہوئے اس کا دامن پیڑ کی اس شاخ سے اُلجھ گیا جو ایک دم نیچے تک جھک آئی تھی….۔ یہ وہی پیڑ ...

  • 16 September

    حقیقت یا افسانہ ۔۔۔ ڈاکٹر غلام نبی ساجد بزدار

    سونا سنگھ منتظر تھا کہ حسب سابق کوئی رس کے گلابو کی ہم شکل لڑکی بال کھولے کمرے میں مسکراتے ہوئے داخل ہوگی او رچند لمحوں کے لیے ہی سہی بارڈر پر اذیت ناک پہرے کے نہ ختم ہونے والے دکھ بھلا کر مسرت کے چند لمحے پاسکے گا۔ کہ اچانک دروازہ کھلا اور چار تنومند نوجوان ہاتھ میں گنداسہ ...

  • 16 September

    خریدلو ۔۔۔ عصمت چغتائی

    ”کیتھی کیتھیسنو!۔۔۔۔“میں نے اسے بار بار پکارا۔مگر وہ ہوا کے گھوڑے پر سوار اپنے نارنجی میولز پھٹکارتی ٹیوب سٹیشن کی طرف لپک گئی ۔ کیتھی مشکل سے پندرہ برس کی ہوگی۔ اس میں ابھی اپنی قوم کی سنجیدگی چپ اپنانے کا سلیقہ پیدا نہیں ہوا۔ وہ کسی کوک دیئے ہوئے کھلونے کی طرح بولے ہی چلی جاتی ہے۔کبھی تو خودہی ...

August, 2021

  • 7 August

    بابا پیر کی جوئیں ۔۔۔ مصباح نوید

    توت کی لچکدار شاخیں موڑ کر مہارت سے چھجا سا بنایا ہوا تھا۔مدھو مالتی  کی بیل کے نیچے ادھ چھپا برآمدہ سیمنٹ کا فرش،دیواروں کے ساتھ اکھڑا چونا پڑا تھا۔گھر کا داخلی دروازہ برآمدے میں کھلتا تھا۔ روشندانوں اور کھلی کھڑکیوں والا ایک پرانا سا گھر تھا۔چڑیا سا دل چہکا: “واہ! اب ایسے گھر دیکھنے کو بھی نہیں ملتے”۔  وہ ...

  • 7 August

    کھڑکی ۔۔۔ سبین علی

    خوف تمہارا پہلا استاد ہے- ایسا استاد جسے تم نے چوسر کے داؤ میں شکست سے بھی  دوچار کرنا ہے سنو ننھی لڑکی!۔ تم یہ سیڑھیاں چڑھتی جانا مگر ڈرنا مت- ہاں یہ سب عفریت حقیقت ہیں ___ جو بھیس بدل بدل کر آئیں گے- کہیں ہوکنے والے بھیڑیوں کی آواز میں تو کہیں ککھ لگانے والے پھنیر کی شکل ...

  • 7 August

    دو وقت کی روٹی ۔۔۔ محمد طارق علی

    مَیں بی اے کی ڈگری ہاتھ میں لئے شہر میں مارا مارا پھر رہا تھا۔ ہر دَر بند، ہر چوکھٹ پر دربان، ہر افسر بد زبان ”چلے جاؤ، کوئی نوکری نہیں ہے“۔ ”مگر صاحب میرے پاس ڈگری ہے“ ”تو ہم خالی ڈگری کا کیا کریں؟“ ”صاحب ڈگری نہیں، میرا پیٹ خالی ہے۔“ ”تو ہم کیا کریں، جاؤ، موٹی سی رشوت ...