Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ اسحاق وردگ

غزل ۔۔۔ اسحاق وردگ

جھوٹ پھیلا رہے ہیں سارے لوگ

ذہن کے مسئلوں کے مارے لوگ

 

میز پر تبصرے ہی کرتے تھے

کتنی آسان جنگ ہارے لوگ

 

وہ کہیں لامکاں نہ ہو صاحب

لاپتا ہیں جہاں ہمارے لوگ

 

جسم کے زاویے سمجھتے ہیں

اس زمانے میں اب کنوارے لوگ

 

رت جگوں سے وہ بھاگ نکلے تھے

نیند کی تیغ نے جو مارے لوگ

 

کتنے بچے یتیم کر گیا وہ

اپنے بچوں پہ جس نے وارے لوگ

 

گر رہے ہیں فلک کی جانب روز

اس زمیں کے حسین تارے لوگ

 

جنگ پہ کاروبار کرتے ہیں

کچھ تمہارے تو کچھ ہمارے لوگ

 

کر رہے ہیں عجیب نظروں سے

آسماں کی طرف اشارے لوگ

Check Also

دیارِ چاکر ۔۔۔ میر ساگر

دیار چاکر! مرید ہوں میں مرید جس نے صداقتوں کے عَلَم اٹھائے مرید جس نے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *