Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » نظم  ۔۔۔ پابلو نرودا / سلمی جیلانی

نظم  ۔۔۔ پابلو نرودا / سلمی جیلانی

تم دھیرے دھیرے مرنے لگتے ہو
گر سفر نہیں کرتے
گر مطالعہ نہیں کرتے
گر زندگی کی آوازیں نہیں سنتے
گر خود کو نہیں سراہتے ۔

تم دھیرے دھیرے مرنے لگتے ہو
جب خود توقیری کو قتل کر تے ہو
جب دوسروں کو اجازت نہیں دیتے
کہ وہ تمھاری مدد کر سکیں ۔

تم دھیرے دھیرے مرنے لگتے ہو
جب اپنی عادتوں کے اسیر بن جاتے ہو
ہر روز لگے بندھے راستوں پر چلتے رہتے ہو ۔۔۔.
اگر اپنے معمولات نہیں بدلتے
اگر مختلف رنگ نہیں پہنتے
اگر اجنبیوں سے باتیں نہیں کرتے ۔

تم دھیرے دھیرے مرنے لگتے ہو
جب عشق سے
اور اس کی ہنگامہ خیزیوں سے
جان چھڑاتے ہو
اور ان سے بھی جنھیں دیکھ کر
تمہاری آنکھیں
روشنی سے دمک اٹھتی ہیں
دل کی دھڑکنیں بے ترتیب ہو جاتی ہیں ۔

تم دھیرے سے مر جاؤ گے
اگر خطرہ مول نہ لو گے
یہ جاننے کو
کہ نامعلوم کتنا محفوظ ہے
اگر خوابوں کی تلاش میں نہ نکلو گے
زندگی میں کم ازکم ایک بار
منطق سے نہ بھاگو گے
خود کو قطرہ قطرہ مرنے نہ دینا
خوش رہنا نہیں بھولنا

Check Also

شہناز شبیر 

اَدھورا پن (روز گل کے نام) چھوٹی سی اس دنیا میں اِ ک میں اور ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *