مضامین

خیال کے دوش پر ! ۔

    کتاب کا نام: چین آشنائی مصنف: ڈاکٹر شاہ محمد مری صفحا ت: 335 قیمت : 280 روپے   شال ایئر پورٹ کی فضاؤں میں تمھارا جہاز پرواز کر گیا تو واقعی تمھارا آدھا میرے پاس رہ گیااور میرا نصف تم لے اڑے۔ زمین کی کشش پوری قوت سے ...

مزید پڑھیں »

سرمایہ دار سے

  نالہِ دلفگار کا عالم جیسے ہنگامہ زار کا عالم میں نے دیکھا نہیں کہیں ایسا ترے اِس اقتدار کا عالم مرے کارِ دراز کی دنیا ترے لیل و نہار کا عالم تری بد کاریوں کا صدقہ ہے عرصہِ کا ر زار کا عالم مری مجبوریوں کا ہنگامہ یہ ترے ...

مزید پڑھیں »

عیباں والیاں دے متھے لالڑیاں

    شیش محل بھی شاہجہاں نے تعمیر کروایا تھا۔ یہاں جب رات کے وقت مشعلیں  روشن کی جاتیں تو  ان کی آگ کے ہزار ہا عکس ان آئینوں سے پھوٹتے ہیروں کی  مانند جگمگانے لگتے۔   شاہ جہاں جو ممتاز محل سے اپنی محبت کی نشانی کے طور پر ...

مزید پڑھیں »

مادری زبانوں کا میلہ 

  (اسلام آباد میلے میں پڑھا گیا تھا) میں مادری زبانوں کے اِس میلے میں شریک ہونے پر آپ سب کو مبارک باد دیتا ہوں۔ خواتین وحضرات ۔ میلہ ہمیشہ شعور، جبلت اور جمالیات کا مجموعہ ہوتا ہے ۔ میلہ انسان کو آزاد تر بناتا ہے ، لطافت عطا کرتا ...

مزید پڑھیں »

بکری اور بھیڑیا

    زگرینؔ کے ریوڑمیں ایک بکری تھی۔ ایک روز بکری نے اپنے دل میں کہا ”ہر سال جب زمستان آتا ہے تو واجہ زگرینؔ ہمیں ہانک کر کچھی اور سندھ کی طرف لے جاتا ہے۔ اس سال میں نہیں جاؤں گی۔۔۔ یہیں ہر بوؔٹی کی خوشبو بھری وادیوں میں ...

مزید پڑھیں »

نیلم

  موسم خوشگوار تھا۔ کوٹ اتار کر سجاد نے کاندھے پر ڈال لیا  اور دور تک نظریں دوڑائیں۔ وہ ابھی تک نہیں آئی تھی۔ تین دن سے متواتر وہ اُسے اِس سڑک پر دیکھ رہا تھا۔ آج اُس نے پکا ارادہ کر لیا تھا کہ ضرور اُس سے بات کروں ...

مزید پڑھیں »

گرندئے شاعر

  نوکیں بلوچی شائری ئے سروغان ، مزن نامیں شاعر و رائٹر ، دپترزانت ، دیمروی پسندیں سیاستکار و کواس ، شوھاز کار میر گل خان نصیر ؔ مروچی گوں مانیست ایں۔ بل آئی ئے یلہ داتگیں میر ات و مڈی گوں وتی پیلویں تواناں گوں ما موجودیں۔ گل خان ...

مزید پڑھیں »

تمہاری داستاں تک بھی نہ ہو گی ۔۔۔

    کور سر پینٹس رُوسی مصنف ایوان یفری موف کا تنصیف کردہ ناول ہے۔   ناول کی کہانی اس طرح شروع ہوتی ہے کہ زمین کے باسی انسانوں نے کپٹلزم اور کمیونزم کی تضاد کو حل کرلیا ہے۔ ہماری دنیا میں ایک ہی معاشی نظام رائج ہو چکا ہے۔ ...

مزید پڑھیں »

تاریخ کا لوکل سر ٹیفکیٹ

سامراج نے ہمیں ہماری جڑوں سے کاٹ دیا، ہمیں ہماری تاریخ سے جدا کر دیا۔ ہم کبھی حلب سے لائے گئے، کبھی کوہِ البرز کی چوٹیوں پہ بٹھائے گئے، کبھی حسینی قافلے کے بچھے کھچے سپاہی دکھائے گئے، تو کبھی کسی محمد بن قاسم کے ساتھ لائے گئے۔ گویا اپنی ...

مزید پڑھیں »