مضامین

جو تم سے میرا رشتہ ہے

تعلق منجمد، برفیلی تنہائی کی شاموں میں انگیٹھی تاپنے کاسا کوئی احساس ہے بے ساختہ سی بے سبب اک مسکراہٹ ہے لہو میں تیرتی وہ روشنی جیسے عریضوں کے دیئے موجوں میں اجالے شگن رکھیں وہ آہٹ ہے جو سناٹوں میں سوچوں کے کسی کے ساتھ جیسی ساتھ رہتی ہے ...

مزید پڑھیں »

عالم ئے اسرار

  کوہ باریں بِچکند اَنت؟ گوات باریں گُژنگ بنت؟ نود باریں تُنگ بنت؟ مور باریں سر شودانت؟ باریں پُل ہم گند اَنت؟ رَنگ ہم نپس کش اَنت؟ روچ وَشدلی زانت اِنت؟ ماہ باریں سُہبت کَنت؟ آس باریں آپُس بِیت؟ آپ واب ہم گند اِنت؟ باریں سِنگ وڈوک و ڈل چُک ...

مزید پڑھیں »

نجس

        یہ غیرت ہے؟ بے غیرتو!۔ اے ایس آئی کٹکٹاتی آواز میں عمررسیدہ بطخ کی طرح قرقرایا۔قیک قیک کی آواز  ریگ مال کی طرح  بہت سوں کے کانوں میں رگڑ کھاتی،گھومتی،دماغوں میں چھید ڈالتی ہوئی،بے پرواہی سے کھڑے،ہتھکڑیوں میں جکڑے دو جوانوں کے پاس سے ہوا کی ...

مزید پڑھیں »

فولڈنگ چئیر

  “فولڈنگ چئیر اٹھائے پختہ سیڑھیاں چڑھتی کسی ادھورے منظرکو پورا کرنے وہ چندلمحے تنہا گزارے گی اس کے راستے میں ایک سیڑھی پر بلّی کی چبائی سوکھی ہڈی پڑی تھی ایک پھٹے ہوئے اشتہار کا ٹکڑا بھی گرا تھا چھت پر نیم تاریکی تھی چاند بھی آدھا تھا قمری ...

مزید پڑھیں »

کیا محبت کہیں کھو گئی ہے

  کیا محبت کے لئے کبھی تمہارا لباس سر نگوں نہیں ہوا یا تمہارا دل آراستہ بالکنیوں سے فاختاؤں کے ساتھ ہوا میں بلند نہیں کیا گیا میں نے رقص کو فاصلے اور رقاصہ کو قریب سے دیکھا وہ تھک کر میرے زانو پر سو سکتی تھی مگر وہ اپنے ...

مزید پڑھیں »

رشیداں اوڈ

  مائی رشیداں پورے شہر میں مشہور تھی۔ عورت، مرد، صغیر و کبیر اُدھیڑ بوڑھے، ہندو مسلمان غرض کہ مائی رشیداں کو سب بخوبی جانتے تھے۔ ہر ایک کے پاس شناخت کے اپنے اپنے پیمانے تھے۔ بچوں کے لیے رشیداں تماشہ تھی، تو شادی شدہ عورتوں کے لیے باعث نفرت۔کنواریوں ...

مزید پڑھیں »

رشیداں اوڈ

       مائی رشیداں پورے شہر میں مشہور تھی۔ عورت، مرد، صغیر و کبیر اُدھیڑ بوڑھے، ہندو مسلمان غرض کہ مائی رشیداں کو سب بخوبی جانتے تھے۔ ہر ایک کے پاس شناخت کے اپنے اپنے پیمانے تھے۔ بچوں کے لیے رشیداں تماشہ تھی، تو شادی شدہ عورتوں کے لیے ...

مزید پڑھیں »

سینٹ میں دونمبری کی توانا علامت

        گزرے جمعہ کے روز سینیٹ کی کارروائی دیکھنے کے بعد سے مسلسل پریشان ہوں۔خود سے انتہائی شرمندہ بھی محسوس کررہا ہوں۔عمر کی تین سے زائد دہائیاں کامل جستجو سے پریس گیلری میں بیٹھ کر پارلیمان کی کارروائی دیکھنے میں صرف کردیں۔35برس کے طویل سفر میں بہت ...

مزید پڑھیں »

سورہ یاسین

یہ آخرِشب کا سناٹا اس نیم اندھیرے رستے پر جلدی میں قدم بڑھاتی ہوئی میں ایک اکیلی عورت ہوں بڑی دیر سے میرے تعاقب میں اک چاپ ہے جو چلی آتی ہے گھر۔۔۔۔۔۔! میرا گھر۔۔۔۔۔۔ ! میں اپنے گھر کیسے پہنچوں سوجھے حلقوم اور بیٹھے دل سے سوچتی ہوں شاید ...

مزید پڑھیں »

بلوچ کانفرنس اقتدار میں

  1932میں یوسف کے والد کیسر خان کو سیاسی وجوہات کی بنا پر سرداری سے معزول کر کے ملتان بدر کیا گیا اور اُس کی جگہ اس کا بڑا بیٹا گل محمد سردار بناتھا۔ شاعر گل محمد بیما راور نا اہلی کی حد تک لاپرواہ ثابت ہوا۔ اُس سے سرداری ...

مزید پڑھیں »