مضامین

سیاہ چادر

بائیس سالہ ایرانی شہری مھسا امینی کےٗنام  ایک نظم جو کبھی لکھی تھی (وہ سیکیورٹی فورسز کی کسٹڈی میں جان کی بازی ہار گئی۔ اس کا جرم یہ تھا کہ اس نے حجاب ٹھیک سے نہیں لیا تھا۔ ) سیاہ چادر ! میں تیری چپ کو کہاں رکھوں گی ؟ ...

مزید پڑھیں »

ایک پرانا مضمون

کورونا ایک سال کا ہوگیا کورونا ایک سال سے انسانیت کو اندھی کھائی میں دھکیل کرچاروں طرف سے اپنے ہلاکت خیز حملے جاری رکھے ہوئے ہے ۔ یہ صرف ایک بیماری نہیں ہے بلکہ معیشت کا فالج بھی ہے ۔ ایک عمومی عالمی بے روزگاری ہے ، سماجی تعلقات میں ...

مزید پڑھیں »

تیسری بیٹی

تیسری بیٹی شہنازشورو کی تازہ کہانی بھی ہے اور WE to ME from Changing کا فلسفیانہ نکتہ نظربھی۔ میں سے ہم میں تبدیل ہونے کی سوچ فلسفیوں کے نزدیک مساوات کی کلید ہے لہذا اپنے ایک مضمون میں شہناز ”میں” کی خوںخواریت کر رد کرتے ہوئے اس کا منطقی جواز ...

مزید پڑھیں »

امین کھوسہ

ایک طویل عمر پانے والے شخص کے بطور محمد امین کھوسہ کی شخصیت پہلودار رہی ہے۔ اور چونکہ وہ بہت متحرک اور پارہ صفت شخص تھا، اس لیے اس کی زندگی کا ہر پہلو بھر پور رہا ہے۔ وہ رج کے ملّا رہا۔ وہ ایک بے مثال سامراج دشمن تھا، ...

مزید پڑھیں »

سوچیے

ہمارے فلسفیوں کے فلسفہ مزاحمت کو کنفیوزن کے طوفان میں چھپا دیا گیا ہے- "”اور ہم نے لطیف و عنایت و توکلی کو یک طرفہ طور پر رحمدل کیسے بنا ڈالا؟_ زندگی کا پاسباں "سب” کی خیر کیسے مانگے گا؟_ زندگی کا پاسبان زندگی کے دشمن کے قتل کے بعد ...

مزید پڑھیں »

مزاحمت یا انحراف

                                دانشوروں،شاعروں اور ادیبوں کے نام کھلا خط             تخلیق بنی نوع انسان سے موجودہ دور تک انسانی معاشرہ مختلف مراحل اورتبدیلیوں سے گزرا ہے۔ انسانی معاشرہ کی تبدیلی کے عمل، محرکات اوراس کی موجودہ شکل اورآئندہ کی صورت کے بارے میں بہت سے نظریات موجود ہیں۔ ان میں سب ...

مزید پڑھیں »

ماہنامہ سنگت کا ایڈیٹوریل

بلوچستان ، پھر غاروں کے سماج میں بے درک ، ہٹ دھرم اور لگام شکستہ بارشوں اور سیلاب کے علاقوں میں تباہی تصور سے بڑھ کر تھی۔ ہم کورونا کے کفر کی شدت سے نکلے ہی تھے کہ حیاتِ انسانی کے تارو پور کو درہم برہم کرڈالنے والی قیامت ٹوٹ پڑی۔ ...

مزید پڑھیں »

انجیلا ڈیوس (خود نوشت)

نقلی بالوں کے گچھے سہمے ہوئے خرگوش کی طرح میرے ہاتھوں میں کانپ رہے تھے۔ میں ہیلن کے ساتھ اکیلی تھی، پولیس سے روپوش اور اُس شخص کی موت سے مغموم ۔۔۔جس کو میں چاہتی تھی۔ دو ہی دن پہلے مجھ کو عدالت کے کمرے میں ہونے والے بلوے اور ...

مزید پڑھیں »

دوپہر

سورج دوپہر کے نیلے آسمان میں پگھلا جارہا ہے۔ اور اپنی گرم، قوس قزح کے رنگوں کی شعاعیں زمین پر اور سمندر پر بکھیر رہا ہے۔ نیم خوابیدہ سمندر میں سے رنگ بدلتے ہوئے بلور کا سا کہرا اٹھ رہا ہے نیلگوں پانی فولاد کی مانند چمک رہا ہے اور ...

مزید پڑھیں »