مضامین

تم، تم اور تم۔۔۔ کی چھتری سے بچنے کے 18 اصول

  گیس لائٹنگ پہ بات ہوئی تو بہت سے متجسس قارئین نے سوال کیا کہ آخر اس کا حل کیا ہے؟ لوگ گیس لائٹر کے ساتھ برسوں کیسے بتا دیتے ہیں؟ کیا گیس لائٹر جانتا ہے کہ وہ کیا کر رہا ہے؟ گیس لائٹنگ سے کیسے بچا جا سکتا ہے؟ ...

مزید پڑھیں »

دامان چوٹی بالا

علاقائی ترقی و خوشحالی علاقی عوام کے لیے بہت ضروری ہے.علاقائی عوام اپنے مقصد کے لیے اپنے نمائندے منتخب کرتی ہے تلکہ اُن کے مساٸل سنے اور حل کیے جاٸیں.ہمارے ملک کی یہ روایت ہے کہ بڑے شہروں کو اولين ترجيح دی جاتی ہے.مگر چھوٹے شہروں دیہات کو صرف نام ...

مزید پڑھیں »

جوآں نہ یاں جنگانی بدیں بولی

  مفکر کوہ سیلمان حضرت مست آج سے دو صدی قبل یہ کہ چکےہیں کہ جنگ کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہے یہ صرف انسانوں کے قتل عام کرنے اور اپنےدوستوں اور ساتھیوں کو کھو دینے کا نام ہے ۔ یہ انا اور ضد کے بیچ انسان کو پیسنے ...

مزید پڑھیں »

خواجہ رفیق

  اکثر و بیشتر تین بوڑھے، شور مچاتے، بر ا بھلا کہتے قہقہے لگاتے لاہور میں میرے فلیٹ کی سیڑھیاں چڑھتے ۔ یہ تینوں’’ جڑواں‘‘ سنجیدہ ترین سیاست کرتے ہوئے بھی بہت ہی ہنس مکھ ، کھلے ڈلے ، تصنع بناوٹ سے پاک، اور ،یار باش لوگ تھے ۔ خواجہ ...

مزید پڑھیں »

ہفت روزہ عوامی جمہوریت

17جون1972کے عوامی جمہوریت میں پاکستان سوشلسٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی( منعقدہ 11جون) کی ایک قرار داد پر پورا جہازی صفحہ وقف کیا گیا ۔ یہ قرار داد بنگلہ دیش کو تسلیم کرنے کے حق میں تھی ۔ اُس زمانے میں جس معاملے پر کشت وخون والا مباحثہ چل رہا تھا، ...

مزید پڑھیں »

1903 کی روسی پارٹی کانگریس

تاریخی طور پر یہ بات درست ہے کہ روسی کمیونسٹ(سوشل ڈیموکریٹک )پارٹی کی پہلی کانگریس 1898میں ہوچکی تھی۔ اور اُس میں پارٹی کے قیام کا اعلان بھی ہوچکا تھا ۔لیکن حقیقی معنوں کی پارٹی ابھی تک وجود میں نہیں آئی تھی۔ اس لیے کہ اب تک نہ تو پارٹی کا ...

مزید پڑھیں »

کبیرداس اور بھگتی تحریک

شمالی ہندوستان کی طرف بہار اور بنگال تک بڑی تعداد میں جولاہوں کی بستیان آباد تھیں، جن کا کام کپڑا بننا اوررنگنا تھا ۔ یہ غریب محنتی لوگ تھے جن کی کوئی سماجی حیثیت نہیں تھی بلکہ انہیں نیچ سمجھاجاتا تھا۔بارہویں صدی میں ترک سامراج نے سر اٹھایااور پرتھوی راج ...

مزید پڑھیں »

اُمید ۔۔۔ (نادِژدا کروپسکایا)

  کروپسکایا کا مستقبل کا جیون ساتھی دور دراز سمارا ؔکے علاقے میں رہتا تھا۔ اس سنجیدہ انقلابی نے تیئیس سال کی عمر میں (1893 میں)سمارا چھوڑا، اور سینٹ پیٹرز برگ چلا آیا۔اور، یہی وہ عمر اور یہی وہ سفر تھا جس میں اُس نے ایک نئی حیات جینی تھی،دنیا ...

مزید پڑھیں »

جب میری بیٹی بیٹا بنی

  فرزانہ میری ایسی دوست ہے جسکی فرزانگی، علم دوستی اور خلوص و محبت نے مجھے اسوقت سے ہی اپنا بنا لیا تھا جب میں ابتداءً میں امریکہ منتقل ہوئ تھی ۔ باوجود اسکے کہ اب گزشتہ سات سالوں سے ہم ایکدوسرے سے بہت دور ریاستوں میں رہتے ہیں ، ...

مزید پڑھیں »

بھنگیوں کی توپ!

  ہمیں اپنی دوست کی عیادت کو جانا تھا ایک اور دوست کے ساتھ لیکن ایک مشکل آن پڑی تھی! ” دیکھیے مجھے بھی خیریت دریافت کرنے جانا ہے لیکن وعدہ کیجیے کہ میری غلط بیانی کی تردید نہیں کریں گی” ” غلط بیانی کی تردید؟ ارے غلط بیانی ہی ...

مزید پڑھیں »