مضامین

"وے کیہڑا ایں”

  وے کیہڑا ایں میرِیاں آندراں نال منحبی اُندا میرا دِل داون آلے پاسے رکھیں تے اکھاں سرہانے بنّے میں سرہانے تے پُھل کڑھنے نیں دھرتی دی دھون نیویں ہووے تے اوہدے تے اسمان نہیں چکا دَئیدا بابا کوئی کِیڑا کڈھ کُرونڈیا ہودے تاں مینوں لڑا دئیں میرا ای اے ...

مزید پڑھیں »

سیل زماں کی ضرب

  احمدو ترکھان کی دوکان سے کچھ دور ٹیڑھے موڑ پر اک پرانے پیڑ کے کچھ ٹمٹماتے سائے میں پیرہ خیر احمد کے بُجھتے قہقہے اور قہقہوں کے درمیاں آنسوؤں کے زہر سے لکھی گئی اِک داستان اِک داستاں، در داستاں، در داستاں داستاں کی اصطلاح جو کہ شوگر کوٹ ...

مزید پڑھیں »

دنیا کہاں جا رہی ہے؟ 

  جب ایٹمی طاقتیں زیست کا استعارہ بنیں تو سمجھ لو کہ دنیا کہاں جا رہی ہے ! اپنی مٹھی میں تم پھول لے کر جہاں کو بچانے چلے ہو یہی سوچ کر حسن دنیا کو آخر بچا لے گا۔۔۔۔۔۔۔ لیکن ایک الجھن ہے کیا حسن اب بھی ؟ ایسا ...

مزید پڑھیں »

میرے ساتھی، میرے اُستاد ، میرے مُحسن

  میر عبداللہ جان جمالدینی کی یاد میں   مجھے اپنی نوجوانی بلکہ لڑکپن سے ہی اپنی زبان سے گہرا لگاؤ تھا۔ یہ تقریباً1954 یا1955 کا زمانہ تھا جب میں15 یا 16 برس کا تھا۔ ماہنامہ ’’ اومان‘‘ باقاعدگی سے پڑھنے بلکہ کبھی کبھار اس میں لکھنے کی ’’ مشق‘‘ ...

مزید پڑھیں »

ایک پرانا ادارتی نوٹ

    تیزاب اور عورت کا چہرہ   کوئٹہ شہرہے صوبائی حکومت کا دارالحکومت ۔ بروری روڈ کے بھرے بازار میں دن دہاڑے ٹیوشن پڑھا کر گزارہ کرنے والی ایک یتیم بچی کو ماں کے ساتھ آگ جیسے جھلسا دینے والے تیزاب کی بارش سہنی پڑی۔ ہمارے سماج کے بارے ...

مزید پڑھیں »

حملہ

  شب کے شب خون میں اک تیرہ شبی کا خنجر دہر کے سینہِ بیدار میں حسبِ معمول وار بھرپور تھا ؛ پیوست ہوا قبضے تک رو کے خاموش ہوئی گنبدِ مسجد میں اذان میوزیم میں کہیں اوندھی گری گوتم کی شبیہہ نے شکستہ ہوئی ؛ نوحے تھے نہ نغمے ...

مزید پڑھیں »

فاختہ کے پنجے

  ہسپتال کے کمرے کی ہلکی دودھیا روشنی میں اس کے چہرے کا رنگ اس گھاس کی طرح لگ رہا تھا جسے مہینوں سے پانی نہ ملا ہو،بے رونق ،زردی مائل ،سبز!۔ وہ سو رہی تھی اس لیے میں آہستہ سے آگے بڑھا اور بیڈ کے پاس پڑی کرسی پر ...

مزید پڑھیں »

عالم ئے اسرار

  کوہ باریں بِچکند اَنت؟ گوات باریں گُژنگ بنت؟ نود باریں تُنگ بنت؟ مور باریں سر شودانت؟ باریں پُل ہم گند اَنت؟ رَنگ ہم نپس کش اَنت؟ روچ وَشدلی زانت اِنت؟ ماہ باریں سُہبت کَنت؟ آس باریں آپُس بِیت؟ آپ واب ہم گند اِنت؟ باریں سِنگ وڈوک و ڈل چُک ...

مزید پڑھیں »

*

    اش مئیں مُرتئی آ رَندا، کوکھر پھذا نہ گُوارنت کو کھر ضرور گُوارنت، مئیں چھم پھذا نہ گُوارنت   اش بندو بُرّ بس بنت، جُڑ بستغ ایں غمانی پونچھا رغام زیری، سر گوار پھذا گُوارنت   گردی سرے نہ زِیری، فتہ ئے دڑو شورش دڑد نخنت دفن گاہ ...

مزید پڑھیں »

کون گلی گئیو شیام

  اندھوں کے شہر میں تصویروں کی نمائش ہے، آشوب زدہ چشم ہے۔۔۔۔ ہے تو سہی! اوہ!!!! یہاں تو رنگ گل سے آتش دوزخ بھڑک رہی ہے ، پھول شدت حدت سے سیاہ پڑے ہیں ، گلابوں سے ٹپ ٹپ لہو ٹپکتا ہے ،آگ کی بل کھاتی لہریں سب کو ...

مزید پڑھیں »