شاعری

سوچ

الجھے ہوئے سے خیالات ہیں الجھی ہوئی سی ہر اِک بات ہے پر سوچ کا کیا کریں؟ یہ وہ دھارا کہ جو زمان و مکاں کی کسی قید کو مانتا ہی نہیں کہ بہنے سے ہے اس کو بس واسطہ اس کی ہر تازگی اس کے بہنے میں ہے روکنے ...

مزید پڑھیں »

سُرخ گُلاب

  میں تمہارے لیئے سُرخ گُلاب لائی تھی یہ کیسے دوں تمہیں؟ کہ اِک قدم آگے کو بڑھتا ہے تو دو پیچھے کو ہٹتے ہیں تمہاری برہمی کا خوف اتنا ہے کہ کانچ کی وہ ساری چوڑیاں جو تمہارے نام پہ پہنیں چھنکنا بھول جاتی ہیں ٹوٹ جاتی ہیں تو ...

مزید پڑھیں »

تَنُور میں جلتا جِسم

ہم اپنے اپنے زاویوں سے دیکھتے ہیں تو جسے کسر کہتا ہے، میرے زاویئے سے کسک ہے کہ اہلِ دِل کا ورثہ تو یہی ہے رات کے بستر پہ سونے والی شاہ زادی دن کے اُجالے میں آنکھوں سے اوجھل ہو چہرے نقابوں کی تہہ میں چُھپ گئے ہوں لکھے ...

مزید پڑھیں »

*

  تِرا خیال بہت دیر تک نہیں رہتا کوئی ملال بہت دیر تک نہیں رہتا اُداس کرتی ہے اکثر تمھاری یاد مجھے مگر یہ حال بہت دیر تک نہیں رہتا میں ریزہ ریزہ تو ہوتا ہُوں ہر شکست کے بعد مگر نڈھال بہت دیر تک نہیں رہتا میں جانتا ہُوں، ...

مزید پڑھیں »

*

تیرے اِرد گِرد وہ شور تھا، مِری بات بیچ میں رہ گئی نہ میں کہہ سکا نہ تُو سن سکا، مِری بات بیچ میں رہ گئ میرے دل کو درد سے بھر گیا، مجھے بے یقین سا کر گیا تیرا بات بات پہ ٹوکنا، مِری بات بیچ میں رہ گئی ...

مزید پڑھیں »

*

جَمے گی کیسے بِساطِ یاراں کہ شِیشَہ و جام بُجھ گئے ہیں سَجے گی کیسے شَبِ نِگاراں کہ دِل سَرِ شام بُجھ گئے ہیں وہ تِیرگی ہے رۂ بُتاں میں چراغِ رُخ ہے نہ شمعِ وَعدَہ کِرن کوئی آرزُو کی لاؤ کہ سب دَر و بام بُجھ گئے ہیں بہت ...

مزید پڑھیں »

*

  بیاکہ استاراں جتگ پُل من شپ ئے گیوارا ماھکانا چو وتی آپ رواں شنگینتہ اِے تئی مھپرئے شنزگ چو سمین مسکینا تو نزانئِے چے درینے ماں دلاں شنگینتہ چندی کسانا پہ بچکندگ و نیم چمی او ناز چندی کسانا پہ بروانئے کماں شنگینتہ کئِے درءَ روت مروت گواڈگ و ...

مزید پڑھیں »

بُوہڑ

  ڈاکٹر شاھ محمد مری نانویں ڈاکٹر کاکا ! بَہوں پھیریں تَرسلے وِچوں وَلدا مُونجھے تھی ویندے ھئیں جِیویں جو کوئی سَانجھے ڈُکھ ھِن جِیویں جو کوئی سُکدے رُکھ ھُن وَل وی دنیا سَاڈے کِیتے کِھیڈ تَماشا تاں نئیں اَساں اِینکوں اپݨا جََاݨ کیں بہوں مُحبتاں نال وسایا اے بَندے ...

مزید پڑھیں »