شاعری

غزل

  نئیں نصیوا کہ گِندغا بیائے،تو وثی ڈیہئے مڑدمے دیم دئے یا وثی جِیغ ئے زامریں پھلّے یا وثی دستئے چھَلّوے دیم دئے ہر کَسے گِنداں زھرنیں مرشاں، دیم شہ دنزان و مُژاں گاریں یا منی ڈیہہ ئے مڑدماں کھَندیں یا مناں دِیریں الکہے دیم دئے درشک بے تاخاں،مال بے ...

مزید پڑھیں »

صرف غیر اہم شاعر

صرف غیر اہم شاعر یاد رکھتے ہیں بچپن کی غیر ضروری اور سفید پھولوں والی تام چینی کی پلیٹ جس میں روٹی ملتی تھی صرف غیر اہم شاعر بے شرمی سے لکھ دیتے ہیں اپنی نظموں میں اپنی محبوبہ کا نام صرف غیر اہم شاعر یاد رکھتے ہیں بدتمیزی سے ...

مزید پڑھیں »

محبت کی آخری نظم

دم رخصت تپے ہوئے لہجے میں خاموش رہنے والا آنکھوں تک سلگ اٹھا ہوگا اس کی سانسوں سے میرا دم رک گیا اور میری ہتھیلیاں دھڑکنے لگیں میرا مرد پورے چاند کی طرح مجھ پر چھا گیا وہ آگ سے مرتب ہے میرے انگ انگ میں پگھلنے کی آرزو ہے ...

مزید پڑھیں »

آگہی

  حوض کے ساتھ ساتھ اگی سبز گھاس پر دھوپ کی لرزشیں دھیمی دھیمی دودھ کی بے مزہ کچی کچی مہک آگہی آنکھیں آنکھوں کے اندر بھی آنکھیں اگ آئی ہیں کیا گھاس کی شاخ ہوتی نہیں نہ سہی گھاس کی شاخ سے پھر بھی چمٹے ہوئی سبز ٹڈے نے ...

مزید پڑھیں »

تانبے کی عورت

  ہتھوڑے کے ہاتھوں میں سونے کے کنگن جچے کیوں نہیں اور تانبے کی عورت تپی— تمتمائی— مگر مسکرائی— جمی ہی رہی کیوں پگھل نہ سکی پاؤں جلتے رہے— وہ کڑی دھوپ میں بھی کھڑی ہی رہی اس کے آنے تلک لوٹ جانے تلک نہیں اس کو سچ مچ کسی ...

مزید پڑھیں »

بعد کے بعد

  صحیفے اترنے سے پہلے اور نبیوں کے نزول کے بعد ہاتھ سے گرے ہوئے نوالوں کی طرح ہمیں کتوں کے آگے ڈال دیا جاتا رہا اس درمیان، آنکھوں کے نیچے ہم نے اپنے ہاتھ رکھے کہ وہ پاؤں پر نہ گر پڑیں اور کانچ کا اعتبار جاتا رہے مجھے ...

مزید پڑھیں »

شبیر جان ئے ناما#بانک_سیمُک

  باریں کدی واتَر کَن ئے دِلگوشءَگیگءُ گوْرکَن ئے درچکےّ بِبئے ءُ بَرّ کن ئے تانگو نہ زاناں رپتگ ئے باریں کدی واتَر کن ئے جی پہ آ وھداں وانگ اَت شَہدیں ھیال ءُ تِرانگ اَت زانت ءُ زُبان ئے زانگ اَت دِل پہ وتن دیوانگ اَت اِے کِسہ ءَ ...

مزید پڑھیں »

کالی

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میرے بہتے سارے آنسو کالے اور تمہاری کھنکتی ہنسی بھی کالی کُن ہاتھوں کا سہارا لوں کہ لبوں پہ لالی پر کالی کے سارے ہاتھ ہی کالے ہیں انتظار کی سُلگتی لکڑیاں کہہ رہی ہیں آن لائن مُحبت اور کالے بستروں پہ لیٹنے سے تھکن کبھی نہیں اُترتی ہے ...

مزید پڑھیں »

غزل

بُلبُلے شِیزار بَندیت دل نَلِیّا مَست بی گْوات کَشّیت غم تئی چو پِیپَّلِیّا مَست بِی نود ہر دیں شَنزگا بنت دل تَلِیّاں مان کئیت ناچ کنت پہ بے سَمائی جَنگَلِیّا مَست بِی حکمتانی زِیل و بَنداں بَستگیں رَکھّت نباں کوتَلیں چیز ءَ نباید کوتَلِیّا مَست بِی عشق آ آس اِنت ...

مزید پڑھیں »

رات بھی ایک بلیک ہول ہے

  نہیں ایسی کوئی بھی رات جس کا کہیں سورج کوئی نہ منتظر ہو رات بھی ایک بلیک ہول ہے جس میں دن کی روشنی دفن ہوجاتی ہے اور اگلے دن اسی بلیک ہول کی کوکھ سے ایک نیا سورج جنم لیتا ہے صبح کا پیغام لاتا ہے دوپہر کو ...

مزید پڑھیں »