مصنف کی تحاریر : ثمینہ اشرف

پرست ۔۔۔ ڈاکٹر انوار احمد

  اگر زندگی نمک پانی ریت سے ملے بے رنگ سے شیشے کی طرح ہوتی۔ مگر کیوں ہوتی۔رب دو جہا ن نے اس کائنات میں علم، محبت، عاشقی کے دیپ جلائے…… شہر ملتان کا دریچہ وا کرکے دیکھیں۔ تو ایک مقدس، معظم سی روشن مسند دکھائی دیتی ہے۔ جہاں ہمارے ...

مزید پڑھیں »

فیض بہ حیثیت نقاد

فیض احمد فیض بہ حیثیت شاعر عالمی شہرت یافتہ ہے۔ اس حوالے سے دنیا بھر میں اس کے فکر و فن اور شاعری و شخصیت پر بہت کچھ تحریر کیا گیا ہے ۔ لیکن بہ حیثیت نقاد اس پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔ اگرچہ یہ حقیقت ہے کہ فیض ...

مزید پڑھیں »

سیاسی کارکن اور مایوسی؟

ہم روزانہ کی بنیاد پر اپنے سیاسی احباب کومایوسی میں ،سماج کے سکوت اور جمود کی شکایتیں کرتے سنتے دیکھتے ہیں ۔ اور وہ سچ کہتے ہیں ۔ آپ سو سال قبل انگریزوں کے خلاف بلوچ مبارزین کے رپورٹر شاعر رحم علی کا سماج دیکھیں ، اور آج کی حالت ...

مزید پڑھیں »

پوشاک

او یک جولاھگے آتکہ او گؤئشتئی:۔ مار پوشا کہ باروا ڈس۔ او آنہیا جواب داثہ:۔ شمے پوشاک شمئے زیبائی ئے مزائیں بہرے لکینی، گڑہ دِہ کو جھائینا نہ لکینی۔ او حالانکہ شما پوشاکہ لافا رازداری ئے آزادی ءَ پولیں، شما اشی اندرا یک لغام او زنجیرے گندیں ارمان کہ شما ...

مزید پڑھیں »

غزل

تیری شوریدہ مزاجی کے سبب تیرے نہیں ، اے مرے شہر ترے لوگ بھی اب تیرے نہیں، میں نے ایک اور بھی محفل میں انھیں دیکھا ہے ، یہ جو تیرے نظر آتے ہیں یہ سب تیرے نہیں ، یہ بہ ہر لحظہ نئی دھن پہ تھرکتے ہوئے لوگ، کون ...

مزید پڑھیں »

بلوچی عشقیہ شاعری

اُس یعنی محبت انسان کی بہترین فطری عادات میں سے ایک خوبصورت ،ولولہ انگیز اور خوش وضع جوش و جذبہ کا نام ہے ۔ محبت کرنا بہت حسین، دلکش ، دلفریب اور شوق ِ دل آویز عمل ہے ۔ یہ محبت بہترین اخلاق و شمائل میں شمار ہونے کے علاوہ ...

مزید پڑھیں »

جوانسال بگٹی

دنیا میں جس نے سٹیٹس کو چیلنج کرنے کی کوشش کی تو اس کے ساتھ دو قسم کے رویے روا رکھے گئے۔ پہلی تو یہ کہ اس کو کافر ، ملحد ، زندیق ، غدار وغیرہ قرار دے کر سولی پر چڑھایاگیا یا سنگسار کیا گیا۔ اور دوسرا رویہ یوں ...

مزید پڑھیں »

کروپسکایا

پانچویں پارٹی کانگریس اگست 1906میں بالشویکوں نے ایک غیر قانونی اخبار ”پرولتاری“ جاری کیا۔ لینن کی ایڈیٹری تھی اور نسبتاً محفوظ مقام وی بورگ اس کی جائے اشاعت تھی ۔ دسمبر1906میں جب شکست یقینی تھی ، لینن، ابھی تک یوںلکھ رہا تھا : ” ممکنات کو استعمال کریں گے ۔ ...

مزید پڑھیں »

غزل

دل ترا امروزئے سوگند انت ھمے کارا بکن، شیشگءِ لوگے ببند و سنگ ئے باپارا بکن۔ چنچو وھد انت واھگ ئے دام ئے تہا مان گیشیتگ، زلپ ئے کئیدس چہ وتی آجو گرپتارا بکن۔ تو اگاں در برتگ چندے رپک دنیاداری ئے، آستینکءِ چے میار انت رام سیاھمارا بکن۔ تو ...

مزید پڑھیں »