مصنف کی تحاریر : شیخ ایاز

نظم

  تم جانتی ہو کہ دنیا کے سب سے قدیم زرتشت مذہب میں بھی ہمارے ملنے کی کڑیاں موجود ہیں علم نجوم کے ماہر آج بھی ہمارے ملن کے دن کو اس کائنات کا عظیم ترین دن گردانتے ہیں، جس دن یونیورسٹی کے کوریڈور میں تم میرا ہاتھ تھام کر ...

مزید پڑھیں »

تم، تم اور تم۔۔۔ کی چھتری سے بچنے کے 18 اصول

  گیس لائٹنگ پہ بات ہوئی تو بہت سے متجسس قارئین نے سوال کیا کہ آخر اس کا حل کیا ہے؟ لوگ گیس لائٹر کے ساتھ برسوں کیسے بتا دیتے ہیں؟ کیا گیس لائٹر جانتا ہے کہ وہ کیا کر رہا ہے؟ گیس لائٹنگ سے کیسے بچا جا سکتا ہے؟ ...

مزید پڑھیں »

ایفیزیا

ہاں تو بات یہاں سے شروع ہوئی تھی ۔ نہیں بات تو ہوئی ہی نہیں تھی۔ پھربھی کوئی بات تو ہوئی ہوگی۔ ہاں یادآیاکہ بات تو ہوئی تھی۔ پر کیا بات ہوئی تھی یاد نہیں۔ میں بھی باتوں باتوں میں کیا لے بیٹھی۔ کیا خوب کہ باتوں باتوں میں اس ...

مزید پڑھیں »

قصہ

  روش شتوں ناواشام بیساں شف تارمہ بیغاں حالاندایغئے، سیاھے شف ناز بی بی آ دل آ بتر تڑسیناغئے۔ آہی دل آ اے شف چو دھکاواں بھیراں دہکاناں جانغئے۔ استی اے تڑس دے ہچو ناغومانینئے پر ناز بی بی جوانیاں سییاں کہ گھوڑوئے کوفیساں بھانگاں۔ آسییاں کہ بھانگاں روش ایشیاں ...

مزید پڑھیں »

دامان چوٹی بالا

علاقائی ترقی و خوشحالی علاقی عوام کے لیے بہت ضروری ہے.علاقائی عوام اپنے مقصد کے لیے اپنے نمائندے منتخب کرتی ہے تلکہ اُن کے مساٸل سنے اور حل کیے جاٸیں.ہمارے ملک کی یہ روایت ہے کہ بڑے شہروں کو اولين ترجيح دی جاتی ہے.مگر چھوٹے شہروں دیہات کو صرف نام ...

مزید پڑھیں »

گم شدہ گاﺅں کا باشندہ

جاتے ہوئے دسمبر کی خون جما د ینے والی سرد رات تھی۔ ہر چیز کو دھند نے یوں لپیٹ رکھا تھا کہ زندگی کی رمق اپنی اپنی پناہ گاہوں میں دُبکی پڑی تھی۔ گہری خاموشی کا راج تھا۔ سنّاٹا گلی گلی سسکاریاں لے رہا تھا۔ ماحول میں بس ہوا کی ...

مزید پڑھیں »

بارش ، خواب اور سمندر

میں نے خواب میں دیکھا، سمندر میرے کمرے میں داخل ہو گیا ہے اور میں مچھلیوں کے بیچ انہی کی طرح تیر رہی ہوں۔ کیا میں واقعی مچھلی بن گئی ہوں؟ ۔مگر مچھلیاں تو مجھ سے منہ موڑ کر اپنی راہ پر چلی جا رہی ہیں، انہیں میرے ہونے کا ...

مزید پڑھیں »

جوآں نہ یاں جنگانی بدیں بولی

  مفکر کوہ سیلمان حضرت مست آج سے دو صدی قبل یہ کہ چکےہیں کہ جنگ کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہے یہ صرف انسانوں کے قتل عام کرنے اور اپنےدوستوں اور ساتھیوں کو کھو دینے کا نام ہے ۔ یہ انا اور ضد کے بیچ انسان کو پیسنے ...

مزید پڑھیں »

خواجہ رفیق

  اکثر و بیشتر تین بوڑھے، شور مچاتے، بر ا بھلا کہتے قہقہے لگاتے لاہور میں میرے فلیٹ کی سیڑھیاں چڑھتے ۔ یہ تینوں’’ جڑواں‘‘ سنجیدہ ترین سیاست کرتے ہوئے بھی بہت ہی ہنس مکھ ، کھلے ڈلے ، تصنع بناوٹ سے پاک، اور ،یار باش لوگ تھے ۔ خواجہ ...

مزید پڑھیں »