مصنف کی تحاریر : فہمیدہ ریاض

عہدِضیا ءالحق …. اندھیر آندھار اور فہمیدہ ریاض

  وزیراعظم بھٹو‘ قتل کے مقدمے میں گرفتار ہوا توسندھیوں کو انقلاب شنقلاب سب بھول گیا۔جائز طورپر، سب اِس ٹھگ ترین اورجابر ترین ”مظلو م“ وزیراعظم کے طرف دار بن گئے۔بوناپارٹزم کی نشان، پیپلز پارٹی عوام الناس کی ہمدردیوں کے ہر زکوٰة کی حقدار بنی ۔دیگر پارٹیوں، ٹریڈ یونینوں کی ...

مزید پڑھیں »

ساتواں نمبر

  لکڑیاں آگ میں دہک رہی تھیں ۔شعلے اوپر تک اٹھ رہے تھے۔گلدستہ کے گال، آگ کی تپش سے انگارہ ہو رہے تھے۔ جانے وہ وہ کب سے رو رہی تھی۔ اور اماں صغراں اسے گاہے بگاہے ٹھیک ہونے کی تسلی دے رہی تھی۔ کچھ تو وہ پورے دن سے ...

مزید پڑھیں »

چلوتم ہی بتا ؤ

تم آخراس قدرناراض کیوں ہو بات تو سمجھو نہ جانے کیوں بگڑجاتے ہو ہم جب بھی کسی احساس محرومی کو مجبوری کو جبروظلم کو تصویر کرتے ہیں چلو تم ہی بتا ؤ تم نے جو تک ہمارے واسطے دستورلکھے ہیں میں ان کونسی شق ِ کونسے نہیں تو یہ کروجوتوں ...

مزید پڑھیں »

اداسی

  باغ کے ایک کونے میں ایک بوڑھا بینچ پر بیٹھا ہے۔ وہ محسوس کرتا ہے شہد کی مکھیوں کی بھنبھناہٹ جو پھولوں کے لبوں سے رس چراتی ہیں۔ ہوا میں تیرتی خنکی کی خوشبو جس میں باغ میں کھلتے ہر ایک پھول، پودے اور پتے کا لمس شامل ہے۔ ...

مزید پڑھیں »

ڈیڑھ گھنٹہ کی ملاقات

  جیسے اِک پارہِ سحاب آج کسی نے سورج کے ساتھ آویزاں کردیا ہے علیحدہ کرنے کی بہت کوشش کی بے سْود یوں لگتا ہے سورج کے سرخ لباس میں یہ بادل کسی نے بْن دیا ہے ڈیڑھ گھنٹے کی ملاقات آج سامنے چوک میں سنتری کی طرح استادہ میرے ...

مزید پڑھیں »

ادل بدل

    ”چوہدری جی! لٹیا گیا، کسے نوں منہ دکھانڑ جوگا نہیں رہیا…“۔واویلا سن کر گہری نیند سویا ہوا زمیندار ہڑبڑا کر اٹھ بیٹھا۔ تیزی سے حویلی کے اندرونی حصے سے باہرکی طرف لپکا۔ نکلتے قد،گھنگریالے بالوں والا خوشرو چوہدری دلاور جسے ہر کوئی نکا چوہدری کہ کر پکارتا تھا، ...

مزید پڑھیں »

یہ تو پرانی ریت ہے ساتھی!

  جتنے ہادی رہبر آئے انسانوں نے خوب ستائے کَس کے شکنجہ آرا کھینچا ہڈّی، پسلی، گودا بھینچا آگ میں ڈالا، دیس نکالا جس نے خدا کا نام اچھالا پتھر کھائے، سولی پائی جس نے سیدھی راہ بتائی شاعر و مجنوں ان کو بولے جن کی زباں نے موتی رولے ...

مزید پڑھیں »

احمد خان کھرل

  ۔1776۔۔21ستمبر1857۔   نازک مزاج سامراج کے غضب کی پیشانی پر احمد خان نے بہت سارے بَل ڈال دیے تھے۔ احمد خان انگریز کے قیلولہ میں بھنگ ڈالنے کے لیے اس کے نرم وابریشمی پہلو کے نیچے ایک نوکیلا پتھر بن چکا تھا۔ اُس کا معدوم کیا جانا اب بہت ...

مزید پڑھیں »

غزل

شہر نو اطوار تیری خامشی بھی ہاؤ ہؤ خواہشوں کا رقص جاری، لمحہ لمحہ چارسو اک مسلسل جنگ ہے جو لڑ رہے ہیں خاکزاد لفظ لفظ اور گیت گیت اور، دور دور اور دوبدو جو بھی سوچا اور چاہا اسکو کرتی ہے بیاں چشم و لب کی خامشی اور چشم ...

مزید پڑھیں »