مصنف کی تحاریر : شاہ محمد مری

انجمن سازی، ایک آئینی حق

  ہمارے آدھے تیتر آدھے بٹیر جمہوری نظام میں ملک کو ایسے چلایا جارہا ہے جیسے کہ یہ ایک گاؤں ہو۔ اور وہاں کے بااثر چودھری جس طرح چاہیں اُسے ہانکیں۔ اُن کا کہا ہی رواج ہے اور اُن کی مرضی ہی قانون ہے۔ اور فیوڈل چودھراہٹ کا یہ سارا ...

مزید پڑھیں »

کلات نیشنل پارٹی کچل دی گئی

عوام کی طاقت سے بہت اچھی اصلاحات حاصل تو کی گئیں مگر دوست دشمن سب کو معلوم تھا کہ بالادست طبقات اِن اصلاحات سے ہل کر رہ گئے ہیں۔ اس لیے کہ برسوں سے جاری اُن کے مفادات پہ پہلی بار اِس طرح کا ڈائریکٹ حملہ ہوا تھا ۔ وہ ...

مزید پڑھیں »

غسان کنفانی

“ نوع انسانی کی تاریخ میں کمزور ہمیشہ طاقتور سے بر سرِ پیکار رہا ہے۔ کمزور اس لڑائی میں حق پر رہا ہے اور طاقت کے نشے میں چور طاقت ور ہمیشہ اس کا استحصال کرتا رہا ہے ", غسان کنفانی نے یہ الفاظ اردن میں شاہ حسین کے خلاف ...

مزید پڑھیں »

آئی ایم ایف کا حقیقی ہدف

      جیو ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیر خزانہ شوکت ترین صاحب نے برملا اعتراف کیا ہے کہ امریکہ کے دبائو کی وجہ سے آئی ایم ایف پاکستان کو ایک ارب ڈالر فراہم کرنے کے لئے کڑی شرائط عائد کررہا ہے۔آصف علی زرداری کی کاوشوں سے ترین ...

مزید پڑھیں »

عمران اور اُس کا کپٹلزم ناکام

”نظام نہیں ، ایک اور چہرہ بدلو “والوں کی طرف سے باقاعدہ انتظام کے ساتھ بحثیں چلائی جا رہی ہیں کہ عمران خان کی حکومت ناکام ثابت ہوگئی۔ وہ بات اس طرح رکھتے ہیں جیسے عمران کی حکومت مرضیوں منصوبوں کے بجائے اچانک آسمانوں سے اتاری گئی ہو۔ بڑے بڑے ...

مزید پڑھیں »

حق دو

  ( شونگال سنگت جنوری 2022) ایک عرصے سے دعویٰ رہا کہ سمندر بلوچستان کی سیاست کو لیڈکرے گا۔ یقین رہا کہ معدنی مزدور اور ماہی گیر بلوچستان کی عوامی تحریک کا مستقبل ہیں۔ مگر یہ دونوں طبقات چونکہ شہروں ،آبادیوں سے دور ہیں( اور معدنی مزدور مقامی بھی نہیں ...

مزید پڑھیں »

امید ِ آخریں

  یہ ممکن ہے ایک بند دروازے پھر ایک بار پر دستک دی جائے ڈیوڑھی پر بیٹھا جائے تھک کے سوچا جائے واپسی کے لیے کونسی سمت اختیار کی جائے پھر یاس و نا امیدی کے بوجھ سے اٹھا بھی نہ جائے سانس سینے تک سوکھ جائے بوجھل قدموں پہ ...

مزید پڑھیں »

یہ معمول میں شامل ہے

  ایک دن کیا دیکھتا ہوں مَیں چوہے بلی نے باہمی مشاورت سے ایکا کرکے جینے کی بنیادیں رکھ لیں میرے شہر میں نمی کچھ ایسے پڑتی ہے کہ لوگ بھی اس منظر میں خود سے جینے کی تدبیریں سوچنے لگتے ہیں اور حیوانی جھلک میں نبھا کے پرتو روز ...

مزید پڑھیں »

ایک نظم کسی چندر کُنج میں

  آج پڑھنت کے پھیر میں ایسے من دیپک کے دھیان میں کھویا اِس دیپ جلن کی آنچ میں بُلھیا مست کے ساتھ الست رہا پھر ایکم نقطہ من موج کی صورت مَیں رنگ ریز_______ ست بھوگ رہا ہوں جیون کو بل دے کر بُلھیا مست کا رقص کالی درپن ...

مزید پڑھیں »

تغیّر

(افضال سید کے نام ) اک تغیّر ہر اک شے کو ہے لازمی زندگی چاک پر گھومتی گھومتی خاک ِ آدم بنی خاک اڑتی رہی روح کو خاک میں باریابی ملی اور بدن بن گئی پھر اذاں دی گئی اور اِک کن میں یہ آسماں بن گیا کہکشائیں بنیں اور ...

مزید پڑھیں »