ایک ادبی رپورٹ

نیلے رنگ کے پیرہن میں
چاند ایسے لگتا تھا
جیسے اس نےآسماں پہنا
ہوا تھا
ستارے آسمانوں میں
روشنی کی بارشیں
کرتے پھرے
تصویر کے ساتھ شعر بھی کسی نے واٹ ایپ کیا تو خالد محمود خان صاحب کے ساتھ لائلپورمیں گزری ایک روپہلی ادبی محفل کا خیال آیا۔ اس شام یعنی مئی کے تیجے دیہاڑ ستارے واقعی روشنیوں کی بارش کر رہے تھے ۔سینیئر دانشور ،محقق و تنقید نگار
خالد محمود خان کی شخصیت کے بہت سارے خوشگوار پہلووں میں ایک خوشگواری یہ ہے کہ وہ ماشاللہ اردو میں پی ایچ ڈی نہیں ہیں رب کریم نے انھیں یہ اعزاز حاصل کرنے سے بال بال بچا لیا ہے حالانکہ وہ کچھ عرصہ زکریا یونیورسٹی شعبہ اردو کے آلے دوالے رہے لیکن جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے! خالد محمود خان نے رسمی تعلیم انگریزی زبان و ادب میں حاصل کی۔ کم وبیش ایک سال دس ماہ تک انگریزی زبان و ادب کے لیکچرار کے طور پر تدریسی فرائض سر انجام دیتے رہے ۔1985 میں سول سروسز آف پاکستان میں کسٹم سروس کے لیے منتخب کیے گئے۔سروس کے آخری آٹھ ،دس سال ان لینڈ ریونیو سروس میں بسر کیے۔خالد محمود خان تحقیق ، تنقید ، علم ِترجمہ ، ترجمہ نگاری اور لغاتیا ت کے میدان میں کام کرچکے ہیں۔
شعبہ اردو کے ریٹائرڈ پروفیسر ساجد خان جنھیں شعبہ اردو کا مجاور بھی کہا جاتا ہے ، کےیار غار ہیں ۔ ساجد خان صاحب ہی نے انھیں میرا تحریر کردہ افسانہ بھیجا ۔انھیں افسانہ اچھا لگا پھر انھوں نے میرے لکھے گئے تمام افسانے کھود کر نکالے اور ان پر ایک دو مضمون نہیں پوری کتاب جی ہاں! پوری کتاب بعنوان:مصباح نوید اور غیر افسانوی نثر ،افسانہ اور شخصیت نگاری” تحریر کر دی ۔ تو جناب ! قصہ تھا لائلپور کی ادبی محفل کا ۔
اس انجمن کے سیکرٹری حسن محمود تھے ۔جن کی تخلیقی صلاحیتوں نے مجھے چونکا دیا۔نظم تو نہیں سنی لیکن ان کا تحریر کردہ افسانہ کمال تھا۔ ادبی گروہ بندی یا چنڈال چوکڑی ہمارے جینوئن نوجوان تخلیق کاروں کو سامنے نہیں آنے دے دیتی۔یہ جو شعر وادب کا ذوق اور قرینہ رکھتے ہیں وہ غیر معمولی لوگ ہوتے ہیں ۔ سائنس کی تعلیم لازم ہے لیکن ادبی ذوق زندگی کو ذائقہ دیتا ہے ، سندرتا عطا کرتا ہے زندگی محض دکان کے نام نہیں ہوتی ۔ لیکن کیا کیا جائے کہ ادب میں بھی ہلکا پن رواج پا گیا ہے۔
ہماری اس ادبی محفل کی صدارت ڈاکٹر سمیرا اکبر کر رہی تھی ۔ وہ نرمی ملائمت کے ساتھ لیکن لگی لپٹی کے بنا خوب صورت گفتگو کرتی ہیں۔اس کے علاوہ سادگی ذہانت اور اعتماد کا مرقع فوزیہ جاوید سے بھی خوب ملاقات رہی ۔وہ افسانے، انشاہیے تحریر کرتی ہیں۔سوبر سے خاور جیلانی بھی موجود تھے ان کا شمار عمدہ ترقی پسند شاعروں میں ہوتا ہے۔ ایک منفرد افسانہ نگار گلزار ملک جن کے کئی افسانوی مجموعے اور ناول چھپ چکے ہیں،وہ بھی محفل آرا تھے ۔انھوں نے عمدہ گفتگو کی ۔ گلزار ملک اپنی تحریروں میں عام آدمی کے دکھ بیان کرتے ہیں،عوام کی بات کرتے ہیں۔ انھوں نے اپنی کچھ کتابوں بھی عنایت کیں اور کتاب کا تحفہ تو انمول ہوتا ہے۔
ماہنامہ :سنگت” کی کچھ کاپیاں بطور سوغات ساتھ تھیں ,جو شرکا کو پش کی گئیں ۔ ڈاکٹر شاہ محمد مری کی زیر ادارت چھپنے والا ماہتاک سنگت جو کوئٹہ سے شائع ہوتا ہے ،کسی تعارف کا محتاج نہیں ۔اس رسالے کی سیاسی، سماجی، ادبی اثر پذیری سے کوئی کافر ہی انکار کر سکتا ہے۔
ماہنامہ” سنگت” کو مسلسل باقاعدگی سے چھپتے ستائس سال ہوگئے ہیں ۔ایک تاریخ ہے جو اس میں رقم ہے۔ کچھ تو پہلے ہی سے سنگت کے سالانہ خریدار تھے اور کچھ اس قافلے میں مزید شامل ہوئے۔اس کے بعد اجلاس کی معمول کی کارروائی شروع ہوئی ۔افسانہ پڑھا گیا۔
خالد محمود خان کے افسانے بغدہ قصائی پر شرکا نے سیر حاصل گفتگو کی ۔افسانہ کا انجام ایک۔پہیلی کی مانند تھا جنھیں کچھ بوجھ نہ سکے لیکن موضوع کی دل خراشی دل چیرتی رہی۔غیرت کے نام پر ہونے والے قتل سماج کی بے حسی اور قانون کی لاتعلقی پر کئی سوال اٹھاتے ہیں، کیا ہمارا سماج ایک مردہ سماج ہے ؟؟ سوائے سڑاند کے کچھ حاصل نہیں یا کہیں زندگی کی رمق موجود ہے؟
———-
خالد محمود خان

تصانیف
تحقیق و تنقید
میر کی۔۔۔ میر جی کے شعری کردار
فکشن کا اسلوب
جدید تنقیدی نظریات
تنقیدی نظریات و مطالعات
افریقی ، امریکی تنقیدی مطالعات
جدید سوانحی ادب
نسائی ادب تحقیق و ترجمه
فن ترجمہ نگاری۔۔۔ نظریات
– فن ترجمہ نگاری۔۔۔ لفظوں کی ثقافت کا نظریہ
فن ترجمہ نگاری۔ اطلاقی جبات
فن ترجمہ نگاری۔۔۔ تاریخ ترجمه
تراجم
آزادی کا طویل سفر(ترجمہ : نیلسن منڈیلا کی خود نوشت Long Walk to Freedom)
الکیمت -(ترجمہ : پائلو کو ٹلو کے ناول AL – Chemist کا ترجمہ)
حمورابی ۔ پہلا قانون ساز بادشاہ
ہنر کی محبوبہ – (ترجمہ : ڈائری ابو ابراؤن )
مارکسی ادبی تنقید
شہزادی خدا حافظ ۔۔۔ بے نظیر بھٹو ہے۔
محمد صلی عالم ہمارے زمانوں کے پیغمبر
کیرن آرم سٹرانگ
لغاتیات ادبیات ۔لغات لسانیات
لغات ترجمه
– لغات تنقید۔۔۔ زیر تکمیل
یاد یاران مهربان ۔ تیری کہانی میری(افسانے)

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*