تاویل

بعض چیزوں پر انسان چاہتے ہوئے بھی قدرت نہیں رکھ سکتا
جیسے کہ روح کو چ±ھوا نہیں جا سکتا
بینائی کے رنگ معلوم نہیں کئے جا سکتے
خوشبو کو توڑا نہیں جا سکتا
تنہائی پوسٹ نہیں کی جا سکتی
درد کو شیئر نہیں کیا جا سکتا
دکھ کاپی پیسٹ نہیں کئے جا سکتے

زندگی کی کسی بھی طرح کی کوئی بھی ایموجی نہیں بن سکتی
موت کے لئے کوئی بلاک آپشن مقرّر نہیں

زیست کے کاپی رائٹس موت کے ہاتھ محفوظ ہیں
اسے بیچنے یا خریدنے کی پاداش میں آپ پر جرح لگ سکتی ہے

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*