ماہانہ محفوظ شدہ تحاریر : ستمبر 2020

شاھینہ شاھین ءِ جان ءِ زیان چنچو ارزان اَت

پدمنتگیں چاگردانی مزنیں المیہ ایش انت کہ جنیں آدم ءَ وتی گیرت ءُ ناموس وَ گوشگ بیت بلے جنین ءَ بستار ءُ ارزشت دیگ ءِ باریگ ءَ جاھے مردین ءِ انا ءُ وت واھی دیم ءَ کئیت جاھے آئ ءِ وت سریں ازّت ءُ ناموس ءُ جاھے آئ ءِ ھرس ...

مزید پڑھیں »

ہفت روزہ عوامی جمہوریت کے 50 سال

۔19فروری 1972 کے ”عوامی جمہوریت“کے گلابی سرورق پہ سید مطّلبی فرید آبادی کی شاعری ہی کو ٹائٹل بنادیا گیا ہے۔ اور اُس کا پہلا شعر ہی زندگی اور زندگانی کی چابی ہے نہ کوئی روک سکے گا یہ کاروانِ حیات مثالِ برق، رواں ہے یہ زندگی کی برات یہ شعر ...

مزید پڑھیں »

کیوبا امریکہ کی قید میں

کیوبا لاطینی امریکہ میں ہے۔ ایک ایسا بھی وقت تھا کہ سارا لاطینی امریکہ سپین نے فتح کیا ہوا تھا۔ انیسویں صدی میں پورے لاطینی امریکہ میں آزادی کے لیے خونی جنگیں لڑی گئیں اور کیوبا بھی زبردست قومی اور حب الوطنی کا ٹھکانہ بنا۔یہ وہی وقت تھا جب امریکہ ...

مزید پڑھیں »

تاریخی ڈاکیومنٹ۔۔۔۔بلوچی زبانئے دیوان

کمال خان شیرانی،ڈاکٹر خدائیداد اور عبداللہ جان جمالدینی پراگریسو رائٹرز کے بعد بہت عرصہ تک غوروفکر کرتے رہے۔ بالآخر انہوں نے یہاں کی اپنی مخصوص صورتحال کا اندازہ لگالیا اور روشن فکر ادبی تحریک کو مقامی رنگ دینے کی ٹھان لی۔جذبات اور آئیڈیلزم اپنی جگہ، مگر جغرافیائی خطے تواپنی اپنی ...

مزید پڑھیں »

غزل

سراپا خواب ہوں اور جاگتا ہوں یہ کس تعبیر میں الجھا ہوا ہوں نہیں پہچان یوں آسان میری شعاعِ مُرتعش کا آئینہ ہوں خموشی کو مری آسان مت لے کہ میں جب بولتا ہوں۔ بولتا ہوں ہوئے متروک سب الفاظ جن کے انہی بھاشاؤں میں لکھا گیا ہوں اذل سے ...

مزید پڑھیں »

غزل

سراپا خواب ہوں اور جاگتا ہوں یہ کس تعبیر میں الجھا ہوا ہوں نہیں پہچان یوں آسان میری شعاعِ مُرتعش کا آئینہ ہوں خموشی کو مری آسان مت لے کہ میں جب بولتا ہوں۔ بولتا ہوں ہوئے متروک سب الفاظ جن کے انہی بھاشاؤں میں لکھا گیا ہوں اذل سے ...

مزید پڑھیں »