ماہانہ محفوظ شدہ تحاریر : جولائی 2020

نظم

چرواہا خواب دیکھتا ہے اس کی ایک بھیڑ گم ہو گئی صرف انچاس بھیڑیں باقی ہیں چرواہا خواب دیکھتا ہے اس کی تین بھیڑیں زخمی ہیں صرف چھیالس باقی ہیں چرواہا خواب دیکھتا ہے بھیڑیے نے اس کے گلے پر حملہ کر دیا بھاگتی منتشر ہوتی بھیڑوں میں سے پیچھے ...

مزید پڑھیں »

”دم گھٹ رہا ہے ، ماں“

کورونا نے دنیا میں تباہی مچارکھی ہے۔ روزانہ بے شمار لوگ مرنے لگے، خاندان برباد ہوئے ۔پسماندگان کی چیخوں نے دھرتی ہلا کر رکھ دی ۔ موبائل فون تعزیتوں کا لاﺅڈ سپیکر بنے ۔اور تازہ قبروں سے قبرستانوں کے پیٹ نو مہینے جتنے ہوتے گئے ۔ اپنے خطے کی بات ...

مزید پڑھیں »

نئی پیدائش

مرا تمام تر وجود ایک اداس مصرع ہے جو تمہیں سحر ہونے تک دہراتا رہتا ہے ایک ایسا پھول جو تازگی سمیت پھیلتا جاتا ہے میں نے ایک آہ بھر کر تمہیں نظم میں ڈھال لیا اور پانی ، آگ اور درختوں میں پیوند کر دیا شاید زندگی اک طویل ...

مزید پڑھیں »

ننھے نصیر کی پریشانیاں

"ابّا کے ساتھ سودا سلف لانا” رات کےکھانے کے بعد امّاں اور ابّا مہینے کے اخراجات کا حساب کرنے بیٹھ گئے۔ ابّا بولے، "میں آج تک سمجھ نہیں سکا کہ میں جو پیسے تمہیں دیتا ھوں، وہ آخر جاتے کہاں ہیں ؟” امّاں بولیں، "جب آپ ایسی باتیں کرتے ہیں ...

مزید پڑھیں »