Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔  صفدرصدیق رضی

غزل ۔۔۔  صفدرصدیق رضی

اب ایک دوسرے کی ضرورت نہیں رہی

جب فاصلے نہیں تو محبت نہیں رہی

اس گھرسیاب یہ نقل مکانی کاوقت ہے

دل میں اگر کسی کی سکونت نہیں رہی

آغازِ عشق میں بڑے ثابت قدم تھے ہم

اب وہ شکست و ریخت سلامت نہیں رہی

جتنے بھی جاں نثار تھے جاں سے گذر گئے

اس کو گماں ہے رسمِ بغاوت نہیں رہی

یہ دکھ نہیں کہ قتل کو روکا نہ جاسکا

یہ رنج ھے کہ خْوئے شہادت نہیں رہی

کافر تھے اہلِ دیروحرم کی نظر میں ہم

جب ہمنہیں رھے تو عبادت نہیں رہی

اب سامنا کریں گے رضی زندگی کا ہم

مشکل نہیں کوئی کہ سہولت نہیں رہی

Check Also

بانجھ بنجھوٹی ۔۔۔ انجیل صحیفہ

میں نے  کثرت سے آنکھوں کی بینائی خوابوں پہ خرچی ہے سو آنکھ اب کوئی ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *