Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » میں عورت ہوں ۔۔۔ صبا (راجی)

میں عورت ہوں ۔۔۔ صبا (راجی)

زخم دل،اشک اور یہ لب

کسں قدر ویران ہوں میں

کیا ہوں۔۔۔۔۔؟ کیوں ہوں میں۔۔۔۔۔؟

سخت پریشان ہوں میں

پری پیکر ہوں یا بسں نشان

کہیں بے سخن، بے کلام ہوں میں

کیا ہوں۔۔۔۔۔؟ کیوں ہوں میں۔۔۔۔؟

سخت پریشان ہوں میں…

کئی گمنام القاب ہیں پیوست

کئی خیال میرے نازاں ہے

کیا ایک ضرورت تو نہیں ہوں؟؟

کیا میں فقط نفس کی

خواہش تو نہیں ہوں؟!۔

کیا ہوں۔۔۔۔۔؟  کیوں ہوں

میں۔۔۔۔۔؟

سخت پریشان ہوں میں…۔

میں تلخیاں جھیل لیتی ہوں

کئی بار زہر پی لیتی ہوں

مجھے روز سننے کو ملتا ہے

تم غیرت ہو ننگ و ناموس ہو!۔

جب بھی آئینہ دیکھتی ہوں

ہونٹ اپنے سی لیتی ہوں

کیا کوئی میرا محا فظ ہے۔۔۔۔؟

کیا کوئی خیرخواہ ہے میرا۔۔۔۔؟

کیا ہوں۔۔۔۔۔؟ کیوں ہوں میں۔۔۔۔۔؟

سخت پریشان ہوں میں

تو اس نیلگوں آسمان میں ٹھہر جا.۔

روز مر جا، بکھر جا

اور پھر سمٹ جا۔۔۔۔

تیرے اسباب پر فقدان ہے شاید!۔

تو یوں ہی زہر کے گھونٹ پیئے جا.۔

کوئی ناصح نہیں تیرا۔۔۔۔

نہ تیرا کوئی محافظ ہے

فقط سب نام کے ساتھی

یہ اتنی سی بات ہے

اے نادان

تو عورت ہے۔۔۔۔۔

تو عورت ہے۔۔۔۔۔

بس عورت ہے……۔

اور

ایک ضرورت ہے۔۔۔۔

Check Also

کورا کاغذ! ۔۔۔  امداد حسینی

(“آصف فرخی“ کے لیے)   وہ جو کورا کاغذ میز پر پڑا ہوا ہے اس ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *