Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » پوھوزانت » جہاں جسکیں دَہ روش ۔۔۔ جان ریڈ/شان گل

جہاں جسکیں دَہ روش ۔۔۔ جان ریڈ/شان گل

پَچار

                ستمبر1917 ئے آخرا سوشیالوجی ئے یک درڈیہی پروفیسر ے کہ روسا آتکیا یث، منی گندوانا پٹروگراڈ ا آتکہ۔ آنہیا کاروباری مڑدماں اوزانوگراں حال داثغہ کہ انقلابہ زور گھٹ آغیں۔ پروفیسر ا ہمے باروایک مضمونے لکھثہ اوگڑہ ملکہ دوڑہ کثئی، کارخانہانی شہراں اور راہکانی میتغاں شتہ………… کہ اوذا اے دیثو حیراں بیثہ کہ انقلابہ زورتہ ودھغایث۔ مُزدی مزدور او ڈغار ئے  پور ہاتی ایں مخلوقہ  لافا ژہ موڑی سراے ٹوک اش کنغ بیث کہ ”سجہ ایں ڈغار راھکاں دیغ بہ بی، سجہ ایں کار خانہ مزدوراں دیغ بہ بی“۔ اغر ہمے پروفیسر جنگہ محاذہ  چکا شُتیں تو دراہیں فوج ہَیئر ہ ٹوکا کناناں اش کثی…………

                پروفیسر حیران اث، پراشی ئے  ہچ ضرورت نیستہ۔ دوئیں آزموتغ  راستہ ثنت۔ جائیدادداریں مڑدم قد ا مت پرست بیغئے ثنت، عوام بنیادی بدلیانی واھگ مند بیغا یث۔

                کاروباری مخلوق اوزانوگریں طبقہ ئے  اندرا موڑی سر یک احساسے اث کہ انقلاب باز دیما شتہ او بازروشاں چلثہ۔ نِیں بایدیں معاملہ ہٹکا ورنت۔ ہمے جذبہ ءَ اندرا”معتدل“ سوشلسٹیں پارٹی، ابارونتسی(1)منشویک او سوشلسٹ انقلابی شریخثنت، کہ کیر نسکی ئے عارضی ایں حکومتہ  پلو بندائی کثش۔

۔ 14اکتوبرا”معتدل”ایں سوشلسٹانی اخبار ا لکھثہ کہ

                 انقلابہ  ڈرامہ ئے دو ایکٹ انت، کہنیں حاکمی ئے تباہ کنغ او نوخیں حاکمی ئے تخلیق۔ سری ایکٹ باز روشاں چلثہ۔ نیں دوہمی ایکٹ ئے شروع کنغ و اشی ہمانکر اشتا فاگوں کہ بیثہ بی لیوکنغ ئے وختیں۔ چوکہ یک مزں شانیں انقلابی اے آگوئشتہ:”سنگتاں، انقلابہ ختم کنغا مں بایدیں اشتاف کنغ بہ بی۔ ہر کسے کہ اشیا باز دیرداں چلینی آں اشی پصلہ  زڑتہ نہ خنت…………“۔

                 پر مزدور، سپاہی او راھکیں عوامہ  لا فا پکوئیں خیالے اث کہ ”سر ی ایکٹ“ دانڑتی ختم نہ ویثہ۔ محاذ ہ چکا فوجی کمیٹی ہر وخت ہماں افسراں گوں ٹکرتنت ہمانہاں کہ وثی سپا ہیاں گوں انسانانی ڈو لا سلوکاکنغ ئے  عادت نہ ویغا یث۔ مُسکا راہکانی چونڈ کثغیں ڈغار ئے کمیٹی جیلاں بند کنے جیغاثنت اے سببا کہ آں ڈغار ئے بار ہا حکومت ئے حکمانی چکا عمل کنائینغئے کوشیشاکنغاثنت۔ او کار خانہانی اندرا مزدور(2) بلیک لسٹ او کُلف بندی خلافا مڑ غئے ثنت۔ چھڑوہمے نہ بلکنا، شمشیادِہ زیات اے کہ ہماں سیاسی جلا وطن کہ گڑ تو پیذاغئے ثنت ہماں ”نا پسندیں“ شہری حیثیتا ملکا ژہ درادارغ بیغئے ثنت او کڑدے حالتاں ہماں مڑدم کہ پرڈیھاژہ وثی میتگا گڑتؤ آتکغنت ہمانہانی چکا1905 ئے  کثغیں انقلابی کار ہ  واسطا کیس چلائینے جیثہ او ہماں قیذ کثغنت۔

                عوامئے ڈول ڈولیں ناوھشیاں پہ ”معتدلیں“ سوشلسٹاں گوئر بس یک ولدی اے اث: آئین سازیں اسمبلیا پہ ھِیل بی کہ مچی دسمبر ا بیثی۔ پر عوام ہمے ٹوکہ چکا تسلا نہ ویثنت۔ آئین سازیں اسمبلی تہ خیر ٹھیک اث پر کڑدے قطعی چیزاثنت کہ پماہاں روسی انقلاب آرغ بیثغہ او کہ پماہاں انقلابی شہید مریخہ  میداناوثی بیوانیں اواریں قبرانی اندرا گلثؤ سڑثغثنت، ہماں تودزگیژ بیثے ننت تونڑیں کہ آئین سازیں اسمبلی بی یا مہ وی۔ او ہماں چیزاثنت امن، ڈغار او انڈسٹری چکا مزدورانی کنٹرول۔ ہمانہانی لوٹ و مطالبہ آنی اندرا شاید ادل بدل کنغاپہ آئین سازیں اسمبلی دھک مں دھکی ماثل کنغ بیثغہ او شاید اغدہ ماثل کنغہ بی داں وختیکہ عوام جو آنیا اندام  مہ ونت۔ بہر حال انقلابا ہشت ماہ تہ بیثغہ او دستا ہچی دِہ نیا تکغہ…………

                ہمے نیا مغا سپاہیاں فوجاژہ پدداثؤ ہَیر ہ معاملہ ئے گی ایشغ شروع کثغہ، راھکاں جاگیردارانی لوغ سوتکغاں او مزائیں مزائیں جاگیرانی چکا قبضہ کثہ، مزوراں پرشت و پروش کثہ او ہڑتال کثغنت………… ظاہریں کہ انڈسٹریلسٹاں، فیوڈلاں او فوجی افسراں ہر ڈولیں جمہوری صُلح سازی خلافا وثی دراہیں زور جثہ…………

                عارضی حکومت اغدہ یک دھکے بے اثریں ریفارم او سختیں جابریں گاماں زیر غایث۔ سوشلسٹ لیبر ئے وزیرئے یک حکمے آمزدورانی سجہ ایں کمیٹیاں حکم داثہ کہ آئندہ آں کار ہ وختا ژہ رندا آپتی نند و نیاذہ کثہ کننت۔ محاذ ہ چکا فوجانی اندرا اپوزیشن ئے سیاسی پارٹیانی ایجی ٹیشن کنوخ دز گیر کنغ بیثغنت، بنیادی تبدیلیاں پہ باڑائیں اخبار بند کنے جیثغنت او انقلابی پروپیگنڈہ کنوخاں موثہ شزا دیغ بیثہ۔ سہریں گارڈ ئے  ہورگ دست کنغہ کوشیش بیثغنت۔صوبہانی اندرا ڈسپلن برجاہ دار غاپہ کزاک دیم دیغ بیثغنت۔

                ”معتدلیں“ سوشلسٹاں او وزارتہ اندرئے آنہانی لیڈراں ہمے گامانی پلو بندائی کثہ اے خاطرا کہ آنہاں جائیدادداریں طبقہاں گوں دست کمکی ضروری گنڑث۔ عوام اشتافی شمانہاں کڑبیغا شروع بیثغنت او بالشویکاں شتو اوار بیثغنت کہ ایمنی، ڈغار او کار خانہانی سرا مزدورانی کنٹرول ئے او مزدور طبقہ ئے  حکومتہ پلہ بنداثنت۔ ستمبر1917 ءَ معاملہ یک بحرانے آ داں پجثغنت۔ کیرنسکی او ”معتدلیں“ سوشلسٹ، ملک ئے  مزائیں اکثریۃ خلافا، جائیدادداریں طبقہاں گوں اواریں حکومتے ٹاھینغا کامیاب بیثغنت او اشی آنسراے بیثہ کہ منشویک و سوشلسٹ انقلابی پہ دائما عوامہ باورا ژہ بے نصیو بیثغنت۔

                اکتوبرئے نیامہ سیدھاں ”ربوچی پوت“ (مزدورانی دگ) ءَ اندرا ”سوشلسٹ وزیر گل“ ئے سر حالایک مضمونے آ ”معتدلیں“ سوشلسٹانی خلافا عوام ئے  جذبہ درشاں کثغنت:

 ”………… ایشنت آنہانی کار گزاریانی لسٹ(3)۔

                ”تسیر یتیلی:  جنرل پولوف تسیفئے کمکا گوں مزدور ہورگ دست کثغنت، انقلابی سپاہی ”ناکام“ کثغنت او فوجہ  اندرا موثہ شزا ئے  منظوری داثہ،

                ”اسکوبلیف:  زردارانی چکا آنہانی نفغ ئے  100 درصد ٹیکس جنغہ کوشیشا گوں شروع کثہ، او ختم کثہ………… او ختم کثہ ورکشاپ وکارخانہانی اندرا مزدورانی کمیٹیانی بھورینغئے کوشیشہ چکا۔

                ”او کسنتئیف: صذانی حساوا راہک، ڈغار ہ کمیٹیانی ممبر جیلا داثغنت او درجنانی حساوا مزدور و سپاہیانی اخبار بند کثغنت۔

                ”چیر نوف:”بادشاہی“ اعلانہ منظوری داثہ کہ شما نہیا فن لینڈ ئے دیئت بھور ینے جیثہ۔

                ”ساوینکوف: جنرل کورنیلوفا گوں گوانگ چیکی پوڑی کثہ۔ اغر ملکہ ہمے آزاد کنوخ پٹروگراڈ ا دژمنہ حوالہ کنغا کامیاب نویثہ تو ہمنگیں سبباں کہ آنہانی چکا آنہی وس نیستہ۔

                زارودنی: الیکسنسکی او کیرنسکی ئے اجازتا گوں انقلابئے کڑدے باز جوائیں ورکر، سپاہی او جہازی زیلاں بند کثغنت۔ بالشویکانی خلافا یک تہمت داریں ”کیس اے“ گھڑغا کمک داثہ کہ روسی عدالتئے ہماں ڈولیں ذلیلیں حرکتے ٹھوخث چوکہ بیلیس ئے کیس اث۔

                ”نکتین: ریلوے مزدورانی خلافابازاری پولیس والا ئے حیثیتا گام زڑتئی۔

                ”کیرنسکی: اشی باروا ٹوک نہ خنغ جوانیں۔ اشی کارنامہانی ورداس بازدراژیں …………“

                بالٹک بیڑہ ئے  ڈیلیگیٹانی کانگریسے ہیلسنگفورسا بیثہ کہ ریزولیوشنے منظور کثئی کہ چوشیں:

                ”ما لوٹوں کہ عارضی حکومتہ اندراژہ ”سوشلسٹ“ او سیاسی مہم باز کیرنسکی سذتی درکنغ بہ بی اے حاطر ا کہ آں ہمنگیں مڑدے کہ مزں شانیں انقلابا او آنہی پجیا انقلابی عواما بورژوازی پلواژہ وث شرمناخیں سیاسی بلیک میل کثورسوا او برباد کنغیں …………“۔

                ہمے کل ئے سدھائیں نتیجگ بالشویکانی سربلندی اث…………

                مارچ 1917 ئے  رنداژہ، آں وختا کہ مزدور او سپاہیانی گرندوخیں موجاں تاؤراؔئد ماڑیا گوں ٹکرا ں وراناں بادشاہی ڈوما مجبور کثغث کہ نا کامیں دلاگوں روسہ واکا بہ گیڑت، آں تہ عوام،  مزدور، سپاہی، او راھک اثنت کہ انقلابہ روا ہر تبدیلی آزور ی کنغئے ثنت۔ آنہاں ملیو کوف ءِ کابینہ در ٹینتہ: آں تہ ہمانہانی سوویت اث کہ صُلح آ پہ روسی بدھیا نی اعلان کثئی۔”ہچ ملک گیری نے، ہچ تاوان نے، او قوماں وث واکی ئے حق“، او اغدہ جو لائیا غیر منظم ایں پرولتاریہ ئے بغاوت اث کہ اغدہ تاؤرائڈ ماڑی سرا اُررِتکہ گوں اے لوٹاکہ سوویت روس ئے حکومتا وثی دستاں بہ گرانت۔

                بالشویکاں کہ دنے وختاں چھڑویک کستریں سیاسی فرقہ اے اث، وثار ہمے تحریکہ لیڈرٹاہینتہ۔ بغاوتئے  تباہ کنوخیں ناکامی نتیجہ اے بیثہ کہ مخلوق آنہانی خلافا بیثہ او آنہانی بے گڑو  شتو ویبورگؔ کوارٹرا لکثہ، آں کہ پٹروگراڈ ئے ”سیں آنتوان“ایں۔(پیرس ئے  درشینہ میتگ کہ مزدورانی مجاہدیں جذبہاپہ مشہوراث)۔ گڑہ بالشویکانی رستریں تعاقب شروع بیثہ، صذانی حساوا جیلاں بند کنے جیثغنت کہ آنہانی اندرا ٹراٹسکی، کولنتائی او کامینیف دِہ استثنت۔ لینن او زینووئیف روپوش بیثغنت، عدالت ئے فراری۔بالشویک اخبار بند کنے جیثغاں۔ سیکا لوخ او  رجعت پسنداں اکھر واویلا کثہ (کہ بالشویک تہ جرمن ایجنٹ انت)کہ دراہیں دنیا ئے  مخلوق اشی چکا باورا کنغئے ثنت۔

Check Also

ینگ بلوچ۔ صد سالہ سالگرہ ۔۔۔ ڈاکٹر شاہ محمد مری

                بلوچستان میں معروف معنوں میں اولین سیاسی پارٹی 1920میں قائم ہوئی۔ اس کا نام ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *