Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » اسامہ امیر

اسامہ امیر

محضر شوقِ محبت پڑھا کل رات گئے

ذہنِ بیکار سے سب کشف و کرامات گئے

کسی انگارے سے خس اور کرشمات اس کے

اس کو چھو لینے کی خواہش میں مرے ہاتھ گئے

اور کچھ دیر مجھے اس کا تبسم تھا نصیب

اور کچھ دیر جو ہم باغِ طلسمات گئے

ہر طرف لوگ تھے اور لوگ ہمیں دیکھتے تھے

ہم بھی بد مست ترے ساتھ گئے ساتھ گئے

ہائے وہ جلوہ ء صد رنگِ وصالِ یاراں

اپنی جانب نِگَراں رکھتا مجھے رات گئے

ایک لمحہ بھی اگر شعر میں تصویر نہ ہو

یوں لگے جیسے مرے ہاتھ سے لمحات گئے

Check Also

چند برس ہی ہوتے ہیں ۔۔۔ ابرار احمد

چند برس ہی ہوا کرتے ہیں دوڑ لگائیے آگے نکلیے اور جان جائیے اچھل کود ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *