Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » یہ کیسا سفر ۔۔۔ ماہ جبین غزل

یہ کیسا سفر ۔۔۔ ماہ جبین غزل

میں چاک پر تھی

میں چاک پر ہوں

یہیں رہوں گی

میں سب سہوں گی

معینہ وقت ختم ہوتے ہی

خاک میں خاک ہو چلوں گی

کسی کمہارن کے ٹھنڈے چولہے میں

کچھ دنوں تک پڑی رہوں گی

ہوا چلی تو کسی شجر سے گلے ملوں گی

قلم بنوں گی دوات لاؤ

کھلی فضا میں لکھوں گی تاریخ

میں جو لکھوں گی

وہ سچ لکھوں گی

نہ گا لکھوں گی

نہ گی لکھوں گی

بحیثیت اک قلم لکھوں گی

اگر کوئی حد لگی جو مجھ پر

تو خود کو مسمار

خود کروں گی

میں تختہ دار تک گئی تو

قلم کے ٹکڑے بھی خود کروں

میں خاک بنکر سفر کروں گی

 

Check Also

لفظ ۔۔۔حاجرہ بانو

زندگی کی راہوں میں لفظ ہی تھرکتے ہیں اس بہار گلشن میں لفظ ہی تو ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *