Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » سرمدی آگ تھی  ۔۔۔ نسیم سید

سرمدی آگ تھی  ۔۔۔ نسیم سید

سرمدی آگ تھی

یا ابد کاکوئی استعارہ تھی، چکھی تھی جو

کیسی لوتھی!۔

خنک سی تپک تھی

تذبذب کے جتنے بھی چھینٹے دئے

اوربڑھتی گئی

دھڑکنوں میں دھڑکتی ہوئی

سانس میں راگ اورسرْ سی بہتی ہوئی

پھول سے جیسے جلتے توے پرہنسیں

ننھے ننھے ستاروں کے وہ گل کھلا تی ہو

موْ بہ موْرچ گئی

سوچ کا

حرف کا

نظم کا

خاک دانِ زمستاں

خنک آگ میں گھرگیا

وقت چونکا

رْکا اورپھر

سرمدی آگ میں تھم گیا

Check Also

فرحین کے لیے! ۔۔۔ امداد حسینی

تیرے گھر پر چاندنی سے ایک سندھی نظم لکھ کر گھر کے در پر چھوڑ ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *