Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » سپردگی ۔۔۔ مصطفی زیدی

سپردگی ۔۔۔ مصطفی زیدی

میں ترے راگ سے اس طرح بھرا ہوں جیسے

کوئی چھیڑے تو میں اک نغمہِ عرفاں بن جاؤں

 

ذہن ہر وقت ستاروں میں رہا کرتا ہے

کیا عجب میں بھی کوئی کرمکِ حیراں بن جاؤں

 

رازِ بستہ کو نشاناتِ خفی میں پڑھ لوں

واقفِ صورتِ ارواحِ بزرگاں بن جاؤں

 

دیکھنا اوجِ محبّت کہ زمیں کے اوپر

ایسے چلتا ہوں کہ چاہوں تو سلیماں بن جاؤں

 

میرے ہاتھوں میں دھڑکتی ہے شب و روز کی نبض

وقت کو روک کے تاریخ کا عنواں بن جاؤں

 

غم کا دعویٰ ہے کہ اس عالمِ سرشاری میں

جس قدر چاک ہو، اْتنا ہی گریباں بن جاؤں

 

تجھ کو اس شدّتِ احساس سے چاہا ہے کہ اب

ایک ہی بات ہے گلشن کہ بیاباں بن جاؤں

 

تْو کسی اور کی ہو کر بھی مرے دل میں رہے

میں اجڑ کر بھی ہم آہنگِ بہاراں بن جاؤں

Check Also

فرحین کے لیے! ۔۔۔ امداد حسینی

تیرے گھر پر چاندنی سے ایک سندھی نظم لکھ کر گھر کے در پر چھوڑ ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *