Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » ایک کاغذ ۔۔۔ راشدہ قاضی

ایک کاغذ ۔۔۔ راشدہ قاضی

وہ ایک کاغذ ہی تو تھا کہ جس پر

حقوق ِملکیت بدل گئے تھے

وہ ایک کاغذ ہی تو تھا

جس نے وراثت کی سند عطا کی تھی

وہ ایک کاغذ ہی تو تھا

جس نے تعارف ہی تبدیل کر دیا تھا

اور تبدیلی ِنام سے تبدیلی پہچان تک

وہ خود کہیں نہیں رہی تھی

نام بدلا، پہچان بدلی، حقوق ملکیت بدلے

مگر وہ خود کو بدل نہ پائی

اور اس ایک کاغذ نے ہی

اسے کہیں کا نہیں چھوڑا تھا

ایسا کاغذ جو صرف ملکیت تھا

تقدس نہیں

ایسا کاغذ جو صرف تبدیلی تھا

تحفظ نہیں

ایسا کاغذ جو تہمت بنا

زندگی نہیں

ایسا کاغذ جو غلامی تھا

اس سے آزادی کا دن

میں ہر سال 8مارچ

کو مناتی ہوں

Check Also

فرحین کے لیے! ۔۔۔ امداد حسینی

تیرے گھر پر چاندنی سے ایک سندھی نظم لکھ کر گھر کے در پر چھوڑ ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *