Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » گزری اور آنے والی بہاروں کے نام ۔۔۔ نوشین کمبرانڑیں

گزری اور آنے والی بہاروں کے نام ۔۔۔ نوشین کمبرانڑیں

ہزاروں گنج ہیں جن پر تیرے پیروں کے بوسے ہیں

تہہِ خاکِ وطن تو ہے یہ پیہم تیرے سبزے ہیں

 

میں اپنے مہرباں چلتن سے کلیاں چُننے آئی ہوں

قطاروں میں شگفتہ تر تیری نظموں کے پودے ہیں

 

وہی پتھر ہیں جن پر کائی کے رنگوں کی مٹی ہے

گُل ِ لالہ کے سینوں میں سیاہ داغوں کے لاشے ہیں

 

ہے صحرا مرگِ دائم کا کہ جورہ جانے والا ہے

ہے جنگل ریت کا، دریاؤں کے ریتیلے تودے ہیں

 

شفق رنگوں میں اب بھی آشتی سِنگھار کرتی ہے

زمیں پر جتنے عاشق ہیں بلوچستاں کے بچے ہیں

Check Also

غزل ۔۔۔۔   محسن شکیل

جسم  سے  روح  تلک  خود  کو  اجالے  ہوئے  لوگ ہیں چراغوں کو ابھی خود میں ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *