Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » نظم ۔۔۔ اسامہ امیر

نظم ۔۔۔ اسامہ امیر

ماؤں کی حالت غیر ہو رہی تھی
جن دنوں متوسط طبقے میں
گیت لکھے جانے لگے
انقلابی گیت
جس میں ایک شخص کی موت
اور ایک چاقو کا ذکر تھا
بیشتر گیتوں میں
ایک چیخ
اور آنسوؤں کی نمکیات
واضح محسوس کی جاتی

مائیں
بیٹوں کے لئے
شب بھر دعائیں کیا کرتیں
اور گھروں کے دروازے کْھلے رکھتیں
واپس آجانے کی راہ دیکھنے والی
کھڑکیوں میں چنی ہوئی
سرخ پرچم سی آنکھوں نے
اپنے اعصاب پر قابو پانا سیکھ لیا

بیٹے
اپنی مٹی فتح کرنے نکلے تھے

Check Also

گزری اور آنے والی بہاروں کے نام ۔۔۔ نوشین کمبرانڑیں

ہزاروں گنج ہیں جن پر تیرے پیروں کے بوسے ہیں تہہِ خاکِ وطن تو ہے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *