Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » دیوار گریہ  ۔۔۔ سعدیہ بشیر

دیوار گریہ  ۔۔۔ سعدیہ بشیر

لگے ہے دل یہ ، دیوار گریہ
ہیں محو ماتم یہاں زمانے
یہ زخم ہیں یا کہ تازیانے
شجر دعاؤں سے لد چکے ہیں
مگر ہیں شاخیں ثمر سے خالی
گماں یقیں کا جو بھید پوچھے
تو اشک کرتے ہیں ڑالہ باری
جو درد ساکن تھے مدتوں سے
لٹیں ہیں خواہش کے کارواں تو
تڑپ کے کرتے ہیں آہ و زاری
وہ اک محبت جو مر چکی تھی
اسی کا تابوت کھو گیا ہے
لباس ماتم میں ہے یہ عدت
رہے گی یونہی یہ غم منانے
دہائی سنتے ہی جسم و جاں کی
لگا ہے جلنے ہر ایک قریہ
لگے ہے دل یہ ، دیوار گریہ

Check Also

The Axiom Of Soil— Nosheen Qambrani

یہ بہشت ِ اجل محوِ خوابِ رواں عمر کی پیاس کا تاس (1) تھامے ہوئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *