Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل  ۔۔۔ آسناتھ کنول

غزل  ۔۔۔ آسناتھ کنول

کیسی اُفتاد آپڑی دل پر
اب ادھر کے ہیں نہ اُدھر کے ہیں

اپنا کوئی پتہ نہیں ملتا
دل کہاں کا ہے ہم کدھر کے ہیں

کون سمجھائے گا ہمارا کچھ
اُن سے روٹھے ہیں بس جدھر کے ہیں

سلسلہ ربط کا کہاں تک ہے
واقعے ضابطے کدھر کے ہیں

دنیا یہ خامشی نہیں اچھی
تم بتاؤ کہ ہم کدھر کے ہیں

اپنی ہی کھوج بھی ادھوری ہے
کس گلی کے ہیں کس شہر کے ہیں

Check Also

The Axiom Of Soil— Nosheen Qambrani

یہ بہشت ِ اجل محوِ خوابِ رواں عمر کی پیاس کا تاس (1) تھامے ہوئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *