Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » ایک بے معنی نظم ۔۔۔ نجیبہ عارف

ایک بے معنی نظم ۔۔۔ نجیبہ عارف

میں لکھنا چاہتی ہوں
ایک ایسی نظم
جس کے کوئی بھی معنی نہ ہوں!۔

سلگی ہوئی آنکھوں کی پتلی کے عقب میں
ایک جامد خواب کے دل کی ہتھیلی پر
کسی ناآشنا چہرے کی بیگانہ روی کے نیل سے
کروٹ بھرے تکیے کے نیچے
اک دریدہ لمس کی چادر کے پرزوں پر

کسی اعلان گم شدگی کی لاحاصل صدا جیسی
جنونی قہقہے کی معنویت کو بیاں کرتی ہوئی
لذت بھری اکتاہٹوں کا منہ چڑاتی
آپ اپنے سے اکجھتی!
خود کو اپنے داؤ سے خود ہی گراتی!۔

خاک میں لتھڑی ہوئی انگلی کے ناخن سے
کسی خاکی بدن پر خون کی باریک دھاروں سے
کئی ان دیکھے رازوں کے
نئے نقشے بناتی!۔
اور ان میں ڈوب جاتی!۔

Check Also

The Axiom Of Soil— Nosheen Qambrani

یہ بہشت ِ اجل محوِ خوابِ رواں عمر کی پیاس کا تاس (1) تھامے ہوئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *