Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » عیسی بلوچ

عیسی بلوچ

نظم 

جیون کی گردن پہ پڑی
شکم کی تیز آری نے نوکری سکھادی
خواہشوں کے بطن سے جنمی
حاجتوں نے غلامی کی راہ دکھلادی
من کے سونے چاندی سے
پیتل کی شکلیں بنانے کا شوق
رفعتوں کو چھونے کی تمنا نے عطا کیا
لذتِ انکار کے میٹھے ذائقے میں
چرب زبانی کی کڑواہٹ
جسمِ بے سر کو ” سر ” کہنے کی عاجزی
ہاں کرنے کی عادتِ بے توقیری
در در پہ سجود کی پابندی
احساسِ محرومی نے بے ضمیری عطا کی
زیانِ مال و متاع سے خائف
عمر کی بیمار سانسوں نے
بڑھاپے کو نئے جہاں کی نوید سنادی
ہاتھ میں تسبیح تمھادی
اداکاری سکھادی

Check Also

روگ  ۔۔۔۔ گلناز کوثر

کیسے ہنستے ہو دکھتی سانسوں سے زخمی ہونٹوں کی درزوں کو بھرتے جیتے۔۔۔ مرتے۔۔۔ چلتے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *