Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » آؤ علَم اٹھاؤ ۔۔۔ انیس ہارون

آؤ علَم اٹھاؤ ۔۔۔ انیس ہارون

(عاصمہ جہانگیر کے لیے)

وہ ہمسفر تھی ، ہم نواتھی
روحِ رواں تھی
یوں اچانک بیجھڑجائے گی
خبر ہی نہ تھی
وہ اُس قافلے کا نشان تھی
جو جہدِ حق کی علامت ہے
جو آبلہ پاہے شکستہ پانہیں
جس نے خواب دیکھے ہیں دنیا بدلنے کے
تاریخ گواہ ہے دنیا وہی بدلتے ہیں
جن کی آنکھوں میں خواب بستے ہیں
خواب کبھی مرانہیں کرتے
جذبے مٹی میں دفن نہیں ہوا کرتے
ہم نے اُس کے جسم کو سُپر دِ خاک کیا
اور روح اپنے ساتھ لے آئے
ہم عاصمہ کی میراث کے وارث
قدم سے قدم مِلا کر چلنے والے
اب بھی زندہ ہیں
نہ ہارے ہیں نہ تھکے ہیں
نہ جُھکے ہیں نہ بکے ہیں
ہمارے حوصلے پست ہیں
نہ علَم سرنگوں ہیں
ہم اس بیش بہا میراث کو
اگلی نسل کو سونپتے رواں دواں ہیں
قدم بڑھا وعلَم اٹھاؤ

Check Also

انسان کی موت کے بعد ۔۔۔ نور محمد شیخ

انسان کی موت کے بعد:۔ اُس کی ، ۔ ساری ذمّے داریاں ختم نہ زندگانی ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *