Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » سب تو ازُن میں ہے ۔۔ سلیم شہزاد 

سب تو ازُن میں ہے ۔۔ سلیم شہزاد 

اور بھی اَن گنت ہیں، مسائل یہاں
بات سیدھی سی ہے
باٹ مرضی مطابق ہوں تو
سب توازن میں ہے

(تم کبھی)
سر کے بَل ، دیکھنا آسماں
سچ میں بادل نکلتے ہیں پیروں تلے
پاکہ اوندھا پڑا ہے جہاں
ٹوٹتے ، جُڑتے ، بنتے ، بگڑتے ہوئے

رنگ ، رشتے ، بدلتے ہوئے
فرصتیں کب، میسّر مگر
اک ستارے پہ رک کر کبھی
دیر تک چاند کو دیکھنا
خاک بن کر بکھرنا کبھی!۔

تم کبھی اسطرح
چُپکے، چُپکے اُترنا
میرے خواب میں
کوئی آہٹ نہ ہو

تو یہ ممکن ہے کیا
رنگ آنکھوں میں بکھرے ہوں اور
لڑکھڑاہٹ نہ ہو

دھیان یہ بھی رہے
خواب کے بارے میں
نیند کو کچھ خبر بھی نہ ہو!۔

رات آئی ہے فصلِ خزاں
مانگنا اپنے پیاروں کی خیر
ابرپاروں کی خیر
اور شراروں کی خیر
آج الگ ڈھنگ سے دیکھنا آسماں

Check Also

The Axiom of connectivity

نوشین قمبرانی زندگی ہے روح مزیخ اور زمیں ہم ۔روح ہیں اپنے اپنے اُوربِٹ کے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *