Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » وسوسوں کے شہر میں اک شام ۔۔۔ رضوان فاخر

وسوسوں کے شہر میں اک شام ۔۔۔ رضوان فاخر

لگتی ہے راستوں پہ ہر اک چاپ اجنبی
عفریت ساحلوں پہ اترتے ہیں اس گھڑی
کاندھوں پہ ڈالے آتے ہیں سامان اپنا بھوت

اک کال سے لرزتی ہوئی ٹیلی فون بوتھ

اک خواب سا خمار ہے ہر سو بچھا ہوا
ہر کوئی ایک ہاتھ ہے خود سے بڑھا ہوا
چُھوٹے ہوئے ہیں سب کے ہی ہاتھوں سے اپنے بھاگ

یادوں کی اک مہک لیے کُھلتے بئیر کی جھاگ
دور اک مکاں کی چمنی سے اُٹھتا ہوا دھواں
بے خوابیوں میں سُرخ سی اک اک آنکھ۔۔۔۔۔آسماں
سورج نگل کے لوٹ رہا ہے عظیم باز
کیا کچھ لئے ہوئے ہے یہ لہروں کا اٹھتا ساز

Check Also

نثری نظم ۔۔۔ نور محمد شیخ

خود کو خوش اَسلُوبی کے ساتھ زندہ رکھو جینا بہت اہم جیے جاؤ حصولِ منزل ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *