Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ وسیم تاشف 

غزل ۔۔۔ وسیم تاشف 

سو جاؤں، پر کیسے سویا جا سکتا ہے
اْس کو بند آنکھوں سے دیکھا جا سکتا ہے

پانی پر تصویر بنائی جا سکتی ہے
اْس کا نام ہوا پر لکھا جا سکتا ہے ! ۔

اب میں جتنی چاہوں خاک اْڑا سکتا ہوں
جتنا چاہوں اتنا رویا جا سکتا ہے

سادہ دل دیہاتی تھا سو مان گیا میں
حالانکہ اْس گھر تک رکشہ جا سکتا ہے

کیا ہم پہلے جیسے بھائی بن سکتے ہیں؟
اِک چولہے پر بیٹھ کے کھایا جا سکتا ہے؟

Check Also

یاخداوند قُدرتانی ۔۔۔ شوکت توکلی

یا حْداوند قْدرتانی کْل چاگِرد مالِکئے ھْشک تر و کوہ وکھلگر مزن کسانئے واژہے باطنَئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *