Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » تواچھا ہوتا ۔۔۔ سمیرا کیانی

تواچھا ہوتا ۔۔۔ سمیرا کیانی

وہ ہاتھ نہ چھوٹتا
تو اچھا ہوتا
بھرم نہ کھلتا
تو اچھا ہوتا
وہ بچھڑے تو دل پکارا
گر ایسا نہ ہوتا
تو اچھا ہوتا
ہم سے نظریں چار کرنے والے
یوں نظریں نہ چراتے
تو اچھا ہوتا
لٹ گیا اسباب تو ہم نے سوچا
ان پہ اعتبار نہ ہوتا
تو اچھا ہوتا
جن کے تھے ہم عاشقِ زار
ان کا بھید نہ کھلتا
تو اچھا ہوتا
محبت ہم سے روٹھ گئی
وہ جو ہنسی مذاق میں
کھو گئے تھے
ان کی تلاش میں ہم
گلی گلی ،نگر نگر ،شہر شہر
گھوم چکے تھے
اِ ن سے اْ ن سے
یہاں سے ،وہاں سے
پتہ ان کا
پوچھ چکے تھے
دلِ آ رزو ،ناامید نہیں
ناکام ہی تھا
آ س کا دیا
ابھی بجھا بھی نہ تھا
امید کی روشنی
ابھی جستجو کا سہارا تھی
ابھی انہیں ڈھونڈنا تھا
آ س کے دئیے اور امید کی روشنی میں
پھر پیا ر کی لو اور محبت کی آنچ سے
انہیں منانا تھا
پھرہم نے
محبت کا گیت گانا تھا
مگر اس سے پہلے
آ س کا دیا بجھ گیا
امید کی سانس ٹوٹ گئی
محبت ہم سے روٹھ گئی
چاہت کی ڈور چھوٹ گئی
محبت ہم سے روٹھ گئی

Check Also

یاخداوند قُدرتانی ۔۔۔ شوکت توکلی

یا حْداوند قْدرتانی کْل چاگِرد مالِکئے ھْشک تر و کوہ وکھلگر مزن کسانئے واژہے باطنَئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *