Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » دلاور علی آزر

دلاور علی آزر

اْسی نے خوابِ تمدْن سنبھال رکھا ہے
کہ جس نے اپنا توازْن سنبھال رکھا ہے

وہ زخم جسم پہ آیا نہیں ابھی جس کے
کْریدنے کو یہ ناخْن سنبھال رکھا ہے

ہَوس میں خود کو پچھاڑا ہے اْور وجود اپنا
برائے موجِ تعفْن سنبھال رکھا ہے

گْزر رہے ہیں سبھی پْل صِراط سے لیکن
کسی کسی نے توازْن سنبھال رکھا ہے

لہو سے کھینچ کر آنکھوں میں اشک رکھ دینا
غمِ جہاں نے عجب گْن سنبھال رکھا ہے

کوئی تو ہے جو بڑھاتا ہے وسعتِ عالم
کسی نے سلسلہء کْن سنبھال رکھا ہے

سنبھال رکھا ہے سائے نے اک بدن آزرؔ
گْماں نے جیسے تیقْن سنبھال رکھا ہے

Check Also

گزری اور آنے والی بہاروں کے نام ۔۔۔ نوشین کمبرانڑیں

ہزاروں گنج ہیں جن پر تیرے پیروں کے بوسے ہیں تہہِ خاکِ وطن تو ہے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *