Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ اورنگ زیب

غزل ۔۔۔ اورنگ زیب

آکر عروج کیسے گرا ہے زوال پر
حیران ہو رہا ہوں ستاروں کی چال پر

اک اشک بھی ڈھلک کے دکھائے اب آنکھ سے
میں صبر کر چکا ہوں تمھارے خیال پر

آ آ کے اس میں مچھلیاں ہوتی رہیں فرار
ہنستی ہے جل پری بھی مچھیروں کے جال پر

مایوس ہو کے دیکھنا کیا آسمان کو
اْڑنے کا شوق ہے تو مری جاں نکال پر

میں تنگ آچکا ہوں کہ سمجھاؤں کس طرح
اک روز چھوڑ دوں گا تجھے تیرے حال پر

کچھ یاد ہے کہ میں نے بنائے تھے تیرے نقش
پھر اتنا ناز کیوں ہے تجھے خدو خال پر

مثلِ گلاب آپ جو مہکے ہیں باغ میں
بوسہ وصول کیجیے تتلی کا گال پر

تفریق کس طرح سے کروگے یہاں پہ زیبؔ
انساں لکھا ہوا ہے درندوں کی کھال پر

Check Also

نہ وش اِنت کیچ مرچاں ۔۔۔ عبداللہ شوہاز

لگشتگ موسم ئے مزواک دستان نہ گوات ئے آمگیں لنٹان پنّے نہ درچکاں گواڑ گے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *