Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » تجھ کو مجھ سے ہے کیا۔۔۔۔زاہدہ رئیس راجی

تجھ کو مجھ سے ہے کیا۔۔۔۔زاہدہ رئیس راجی

میں کہ دریا نہیں
میں کہ صحرا نہیں
میں نہ منزل ، نہ رستہ ، نہ راہ ِ سفر
تجھ کو مجھ سے ہے کیا؟

میں بتوں کی پرستش کی قائل نہیں
تجھ کو دعوی خداءکا ہے تو رہے
من کے کعبہ کو مندر بنانا نہیں
دل کے مَسند کی قدریں گرانا نہیں
لاکہ کافر کو اس میں بٹھانا نہیں

میں نہ مہر و وفا
میں نہ جانوں جفا
مجھ کو جو ہو سو ہو
تجھ کو مجھ سے ہے کیا؟

میں نہ ظالم کی صف میں، نہ مظلوم کی
میں نہ قاتل کی صف میں، نہ مقتول کی
میں کہ میری نہیں سمجھو تیری نہیں
مجھ کو اپنا نہیں ہے تو اوروں سے کیا؟
تجھ کو مجھ سے ہے کیاَ؟

میں نہ ماضی کے پنّوں پہ لکھا نشاں
نہ ہی کندھے پہ اب کے ہوں بار ِ گراں
نہ میں ٹہری ہوئی ، نہ میں سیل ِ رواں
نہ تو اپنے لئے چاہوں سارا جہاں
نہ میں تیرے لئے کوئی سود و زیاں
تیرا کھاتہ الگ میرا کھاتہ الگ
تجھ کو مجھ سے ہے کیا؟

 

Check Also

کھڑکی میں چاند ۔۔۔ فہمیدہ ریاض

میں جس کمرے میں رہتی ہوں اس کمرے میں اک کھڑکی ہے گر رات کو ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *