Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ انجیل صحیفہ

غزل ۔۔۔ انجیل صحیفہ

میرا چہرا بھولا او ماہی
پر روپ سنپولا او ماہی

تیری تال سے تال ملا بیٹھی
میرا انگ انگ ڈولا او ماہی

کوئی راکھ پتنگوں والی ہو
جلے حسن کا شعلہ او ماہی

مجھے بھیج نااپنی بستی کا
وہی اڑن کھٹولا او ماہی

تیری سندرتا پہ حیراں ہوں
مجھے درپن بولا او ماہی

میں نے بند کواڑ بھی کھول دئیے
میں نے من بھی کھولا او ماہی

میرے نین نَیّن سب داسی سے
میرا جوگی چولا او ماہی
تیرا لمس لہو میں دوڑا ہے
تو نے زہر سا گھولا او ماہی

تیری پریت میں سدھ بدھ کھو بیٹھی
تیرے عشق نے رولا او ماہی

میرے روپ سروپ کو پوجتا ہے
تو ہے سانول ڈھولا او ماہی

مجھے پریم کے اکھشر بھول گئے
کوئی پندرہ سولہ او ماہی

میرا ہار سنگھار بھی بے مطلب
تیرا دل بے مولا او ماہی

مجھے گْر ویوپار کے سکھلا دے
ذرا ماشہ تولا او ماہی

Check Also

ٹکڑیاں (چھوٹی نظمیں) ۔۔۔۔۔ تمثیل حفصہ

۔1۔کشتی جل جاؤ۔۔۔۔۔ جاؤ۔۔۔۔۔۔ چاند کے پار۔۔۔۔ اک ندیا بہتے پانی کی۔۔۔۔ نیند کی لوری ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *