Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ کاوش عباسی

غزل ۔۔۔ کاوش عباسی

کچھ نہ کچھ کہہ خفا تو کر ہی دیا
تم نے ہم کو جدا تو کر ہی دیا

کچھ دنوں کا جنوں سہی، ہم نے
حَقِ اُلفت اَدا تو کر ہی دیا

نامِ اُلفت ہمارے جینے کو
آپ نے اِک سزا تو کر ہی دیا

شوق نے تیرے، میرے جیون کے
راستے کو ہَرا تو کر ہی دیا

موم تھا جو اُسے کیا پتّھر
وقت نے کیا سے کیا تو کر ہی دیا

آگ سی اِک تلاش نے کاوشؔ
تمہیں کُچھ سر پھرا تو کر ہی دیا

Check Also

نثری نظم ۔۔۔ نور محمد شیخ

خود کو خوش اَسلُوبی کے ساتھ زندہ رکھو جینا بہت اہم جیے جاؤ حصولِ منزل ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *