Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » نظم  ۔۔۔ کے بی فراق

نظم  ۔۔۔ کے بی فراق

کون نگر ہے میرا
ہم یہ جان پاتے
تو جیت لیتے خود کو شاید
لیکن خود کو سَر کرنے میں
مَیں نے کتنی صدیوں کے دکھ
ایک ہی شبد میں
ارپن کرکے
گھول کے پی لیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔.
امرت رس کی صورت مجھ کو
سمان ملا اِس
کْمبھ کے جیون گیان سے گزرے
کون یہ پھر چاہت کی اگنی
گھول کے پی لے
اور تبھی خود
انتم سادھنا اوڑھ کے جی لے
جیسے میرے
اپنے پن نے
خود کو لانگنے کی دْھن میں
من برہما کا
چُھوکر دیکھا
اور ابھی تک سوچ میں ہے یہ
جانے کون نگر میرا ہو
اپنا کہنے کی جسے پھر
اِس بالک کو
شبد ملے

Check Also

غزل ۔۔۔۔ افتخار عارف

قصہِ اہلِ جنوں کوئی نہیں لکھے گا جیسے ہم لکھتے ہیں، یوں کوئی نہیں لکھے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *