Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ وحید نور

غزل ۔۔۔ وحید نور

بس یونہی آنکھ نے خواہش کی ہے
ورنہ کب غم کی نمائش کی ہے

کچھ دنوں اور مجھے رہنے دو
درد نے دل سے سفارش کی ہے

چاک داماں ہمیں رہنے دیتے
آپ نے کیوں یہ نوازش کی ہے

کچھ تو مٹی کا بھلا ہو جائے
اس لیے ابر نے بارش کی ہے

کیوں بنایا ہے مجھے ہجر نصیب ؟
یہ سزا کون سی لغزش کی ہے؟

بھول جانے کا ارادہ بھی تھا
یاد رکھنے کی بھی کوشش کی ہے

شبِ تاریک گزرتی ہی نہیں
وقت نے وقت سے سازش کی ہے

آپ اس کو بھی بغاوت سمجھے
ہم نے تو صرف گزارش کی ہے

Check Also

فہمیدہ ریاض کی کہی ہوئی آخری نظم 

(بشکریہ نجمہ منظور اور انیس ہارون صاحبہ) میں جس کمرے میں رہتی ہوں اِس کمرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *