Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » دانیال کے لیے ایک نظم ۔۔۔ محمود ایاز

دانیال کے لیے ایک نظم ۔۔۔ محمود ایاز

وہ کون تھا
جس نے آ نکھ کھولتے ہی
ایک سرو قامت
کالا سایہ دیکھا تھا
جوتا دیر اس کے روبرو
چیختا اور بھونکتا رہا
بود کا سایہ تھا
وہ کون تھا
جو ایک کالی کھڑکی سے
زیست کا تماشہ دیکھتا رہا
اس لمبی
اور نہ ختم ہونے والی سڑک پر
نہ وہ اجنبی
سورج دیوتا ہے
نہ اس کے قدموں کے نشان
وہ کون تھا
جو ناراض لفظوں میں
کالے استعاروں سے
زندگی کی تفہیم کرتا رہا
وہ کون تھا
جس نے زندگی کے حبشی کو
اتنے قریب سے دیکھا تھا

Check Also

The Axiom Of Soil— Nosheen Qambrani

یہ بہشت ِ اجل محوِ خوابِ رواں عمر کی پیاس کا تاس (1) تھامے ہوئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *