Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » پردہ گرنے والا ہے ۔۔۔ قندیل بدر

پردہ گرنے والا ہے ۔۔۔ قندیل بدر

دھواں اٹھنے لگا ہے گنبدوں سے
جلائی جارہی ہیں پاک روحیں
مساجد کے درودیوار پر چھینٹے لہو کے
فضا ماتم کناں ہے
ہوا شوریدہ سر ہے
موذن خاک کی چادر لپیٹے سورہے ہیں
خدا ناراض تو کل تک نہیں تھا
مگر اب رابطے سب منقطع ہیں
نہ جانے کون سی سازش ہوئی ہے آسماں پر
جو آدم بٹ رہے ہیں
ہمارے اپنے تن سے اپنے ہی سرکٹ رہے ہیں
کہانی ایک ہی لکھی گئی تھی
فقط کردار بدلے جارہے ہیں
اچانک کیا ہوا ہے
ملایا جارہا ہے خیر وشر کو
مٹایا جارہا ہے بحر و بر کو
زمانے کے قدم تھکنے لگے ہیں
خدا اگلی کہانی لکھ رہا ہے

Check Also

غزل ۔۔۔۔ افتخار عارف

قصہِ اہلِ جنوں کوئی نہیں لکھے گا جیسے ہم لکھتے ہیں، یوں کوئی نہیں لکھے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *