Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2018 » November (page 8)

Monthly Archives: November 2018

ذولفقار یوسف

نظم مرے بدن پر ہے بوجھ اتنا کہ انگ سارے چٹخ گئے ہیں میں دھار مِک بھاوناؤں کا اک وِشال پتھر اٹھاکے صدیوں سے پھر رہا ہوں برمُودا مُثلث  جذبے سارے گم گشتہ ہیں لوگوں کی گویائی کم ہے آنکھوں کے دپپک روشن ہیں پر ان کی بینائی گم ہے ظلم وستم کی ارزانی ہے مصنف کا انصاف بھی گم ...

Read More »

ذکیہ جمالی

منظر نامہ آنکھوں میں کچھ خواب اُترے ہیں تخیل نے کچھ منظر بُنے ہیں اک انجان ڈگر ہے اور میں ہوں شاید کوئی خواب فکر ہے اور میں ہوں شش جہت خوشبو پھیلی ہے عشق پیچاں کے پھول کھلے ہیں دھرتی ماں کے دامن میں کاسنی شگوفے پھوٹے ہیں پاکیزہ سوچوں کے گلاب کھلے ہیں!۔ خواب نگر کی باڑ سے ...

Read More »

دانیال طریر

من تو شدم۔۔ کتنے دن سے ہونٹ صحرا کی سلگتی ریت کے اوپر پڑے ہیں جل رہے ہیں اب انہیں جھرنے پہ رکھ دو کھردری بوری پہ دیکھو جسم کب سے چھل رہا ہے روئی لے کر برف کی اک نرم سا بستر بنادو کتنی مدت سے نہیں سویا سلا دو روح کانٹے دار جھاڑی میں کہیں اٹکی ہوئی ہے ...

Read More »

ڈاکٹر منیر رئیسانی

PARASITE CLASS بستی بستی نام ہے جن کا جن کے چرچے قریہ قریہ جن کے گرد بنے ہیں ہالے تیز سنہرے رنگوں والے جن کے پاس ہیں جال نرالے مقناطیسی دھاگوں والے جن کے پاس طلسم ہیں ایسے جو بھی ان کی جانب دیکھے بس وہ ان کی جانب دیکھے جو بھی دیکھ وہ یہ بولے اور نہیں ہیں ان ...

Read More »

عصمت دُرانی

خواب دھمم دھمام ڈھول پر وہ دلنواز موگری برس پڑی تو خلق کے ہجوم ناچنے لگے فضائیں ناچنے لگیں ہوائیں ناچنے لگیں وہ جوش ، وہ خروش رونما ہوا کہ عرش سے زمیں کو جھانکتے ہوئے نجوم ناچنے لگے مگر یہ خواب دیر تک چلا نہیں (سراب جوئے آب میں ڈھلا نہیں) کہ دفعتاً نگاہ میں وہ دلنواز موگری چمک ...

Read More »

خیام ثناء

انسانیت  میرے چاروں طرف میں ہوں!۔ مگر کچھ اجنبی ٹوٹے ہوئے چہرے، پرانے لوگ ، اور انجان، ان دیکھے سے سایے مجھ کو پیار میں نجانے کیوں؟ عزیزوں،خون کے رشتوں سے زیادہ آج کل مجھ کو بھکاری ، اور وہ مزدور مجھ کو اپنے لگتے ہیں!۔ میں جب بھی اُن سے ملتا ہوں میرے اندر کوئی چلانے لگتا ہے نگاہوں ...

Read More »

حمیرا صدف حسنی

سچ بولو گے؟۔۔۔۔ انسانوں کے بھیس میں بیٹھے وحشی کو وحشی بولو گے۔۔۔۔ کٹ جاؤ گے مر جاؤ گے دیواروں میں چنواؤ گے زندانوں میں جل جاؤ گے سچ بولو گے؟ مر جاؤ گے بیچ سڑک میں آ کر کوئی چند پیسوں کی اک گولی سے چھین کے سانسیں لے جائے گا جرم وہ کر کے بچ جائے گا اور ...

Read More »

حمید لیغاری

اژما مْریذ دْراہا شتہ ھانی دہ اِشتئی بانہڑاں میری سلِہہ گوں جابہاں رِندی تْرا لوھیں کماں ھانی گوں کونجی گڑدنا گڑتو دِہ رِنداں گؤشتغث اژما مریذ دراہا شتہ ٹَپاں وثی پاشینغث براں تلاں گوازینغث درداں چہ ایکا نارغث ھانی زھیراں گوارغث گڑتو دِہ رنداں گؤشتغث اژما مریذ دراہا شتہ مستاں گوں ریخاں جھاگغث ریڑیں گْذاں جانا کثو قولاں وثیغاں پالغث ...

Read More »

جہاں آراء تبسم

ایک یا قوتی نظم (کوئٹہ کا نوحہ) اے مرے دوست میری ایک تمنا تھی کہ میں تیری چاہت میں کوئی نظم لکھوں اک تیرے پیار کی حدت میں تپکتی ہوئی نظم جس کا ہر لفظ ہو یا قوت کا لفظ تیرے جذبات کی حدت میں سلگتا یا قوت اور یا میرے حیا رنگ لبوں سا یاقوت سرخیِ حُسن سے دہکا ...

Read More »

جمال بشیر

اے ساھگا لیلو جتگ!۔ ہر شپا درکپاں مراداں گوں دمبراں چنت برا وتی توکا گوں گمانی ھزابی آ بلکیں دانکہ ویرانیں جنگلے بئیت انت من چراگے گماں گوں روک کتیں من ہمے درچک ئے ساھگے آ بوپتیں چو ندارہ کتیں وتی پیما اے ھدا کمو زاہر ا بیتکیں تنگیں مرگے ئے ندارہا ترمپے ارسے چہ نگاہاں ریتکیں درست شمشوتیں چہ ...

Read More »