Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2018 » September

Monthly Archives: September 2018

چوتھا دن ۔۔۔ قندیل بدر

ابھی کچھ کام باقی ہے ابھی سورج پہ پہلا پاؤں رکھنا ہے فلک کا ریشمی نیلا دوپٹہ چاک کرنا ہے خدا سے بات کرنی ہے اک ایسی رات کرنی ہے جہاں سورج ستارے ہوں وہ نورانی نظارے ہوں نہا کر جن میں سب انسان ایسی آگ ہو جائیں فرشتے راکھ ہو جائیں ابھی تو چاند کی قاشیں بنانی ہیں درختوں ...

Read More »

کہانی  ۔۔۔ امداد حسینی

اک مزدور کی ہے یہ کہانی جتنی نئی ہے اْتنی پْرانی اک مزدور کی ہے کہانی جو مِل میں رات کی ڈیوٹی کرتا تھا اور گھر آکر دن بھر سوتا رہتا تھا ! ۔ اْس کابیٹا نام تھا جس کا راجا میلے کچیلے پھٹے پْرانے کپڑے پہنے اْجلے اْجلے کپڑے پہنے اسکول کو جاتے بچوں کو حیرت سے اور حسرت ...

Read More »

دل جلتا ہے ۔۔۔ وہاب شوہاز

اک کرب ہے میرے سینے میں، سہتا ہی رہوں دل جلتا ہے کہہ دوں تو شکایت ہوتی ہے، اور لب سی لوں دل جلتا ہے ہر سو ہے تماشہ مقتل کا ، بس خون ہی خون ہے دھرتی پر دل خون کے آنسو روتا ہے، میں پھر بھی جیوں دل جلتا ہے ماؤں نے جنے تھے خواب حسیں ، جوویرانوں ...

Read More »

سفر ۔۔۔ نوشین 

یہ ازَل زادیاں تو نہیں گردشیں کوئی آسیب ہیں جو سِحِر پھونکے ہم پہ ہمیں خِطّہِ گْم شْدہ کی طرف مٹ گئے راستوں پہ لیے جاتی ہیں اور رْکتی نہیں اپنی پٹری سے ہٹتی نہیں جْھولا کھاتے ہوئے سَر ہمارے کسی اور گردش سے واقف ہوئے جاتے ہیں اور خوابوں تلک اپنی آنکھوں میں بَنتی سْرنگوں کو ہم اپنی آنکھوں ...

Read More »

شہاب اکرم

من پْریں آسمانے آں؟ من شھر کبرے آکتگ او زر کْدام بستگیں چراگے آ وتارا پْلے ئے تہا چو وشبوئے آَ شنگ کتگ داں رھگوزی مسافریں گلابے بئیت ودم بِکنت !۔ منی تہا دو درچک دو ترمپ واب ئے ساھگاَ ماں رستگ اَنت ایشانی شاہ شپاتھاریانی تاک پِر کن اَنت او روچاگار بنت ندارگانی دیدگاں منی نْوں دست وچمّ شپ ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ نعیم ناز

اداس کمرے کے کونے کونے میں جیسے غصہ پڑا ھوا ہے یہ کپ میں چائے نہیں ہے پرسوں سے ایک لمحہ پڑاہوا ہے ھماری بستی کے سارے باسی نئے سفرپر نکل پڑے ھیں پرانی چوپال میں پرانی پری کا قصہ پڑا ھوا ھے ادھوری الفت کا راز ھے یہ کہ سب ادھورے ھی رہ گئے ہیں یہ زرد پتوں میں ...

Read More »

بشر

قربان کلاچی بدست :رزاق شاہد “او وی انسان ہے سوچ دے عرش تے ماہ و مریخ دا ہاں لتاڑی بیٹھے، اے وی انسان ہے بھوئیں تے چنبے پکا تے مقدر دی لکھ پڑھ کوں تاڑی بیٹھے.۔ جئیں زمانے دے کمزور بْت کوں بچائے رات ڈینھ رت پلیندا رہیا،۔ جئیں ہِیں دنیا دا رنگین نقشہ بنڑائے شہر کوچے بازار سجیندا رہیا.۔ ...

Read More »

منتشر خبروں کی پوٹلیاں ۔۔۔۔ سلمیٰ جیلانی 

سوچتی ہوں وطن سے اب کوئی ٹھنڈی ہوا کا جھونکا نہیں آتا ہر صبح اپنے ساتھ دکھ بھری خبروں اور تصویروں کی پوٹلیاں لے آتی ہے یہ صرف مجھے ہی نظر آتی ہیں ورنہ زندگی تو چہچہاتی ہے مرد اور عورتیں فلرٹی انداز میں پرلطف باتیں کرتے ہیں اپنی شامیں خوش گوار بناتے باتوں کے مشروب کی چسکیاں لیتے اور ...

Read More »

آخری ہچکی ۔۔۔ آسناتھ کنول

سوچوں کے گڈ مڈ ہوتے سورج کو تم تھکن کا لبادہ دے رہے ہو یہاں فلسفیوں کا کوئی ٹھکانہ نہیں زندگی اپنی بے حسی کی آخری ہچکی لینے لگی ہے رفتہ رفتہ خیالات کانٹے بننے لگے پیروں کے تلووں میں گھنے پتھریلے ریزے لہو پینے والے کیڑے ہیں نہ میں رکُتا ہوں نہ سکون کی ہریالی بکھرتی ہے بدن کو ...

Read More »

خاموش رہو ۔۔۔ گلناز کوثر

کون مسافربرسوں سے سنسان پڑی خاموش گلی سے گزرا آنکھیں ملتی رات کی اوک میں شام گلابی گاگر خالی کرتے کرتے چونک اٹھی کب ریشم سے ریشم الجھا اور بجتی ہوئی سرگم سے ٹوٹ کے سانس گری کس آہٹ نے دل میں پھیلی اک ویرانی پر پاؤں دھرا کب دیر سے جلتی دھرتی پر بادل برسا۔۔۔۔ بادل برسا اور سوندھی ...

Read More »